سنتِ ابراہیمی سے متعلق چند سچ

گوشت فریج میں جانا چاہیئے یا پھر ۔۔ قربانی کے گوشت میں کس کس کا حق ہوتا ہے؟ جانیئے سنتِ ابراہیمی سے متعلق چند سچ! عیدِ قرباں پر ہر سال ہی صاحبِ استطاعت حضرات قربانی جیسے عظیم فریضے کو سرانجام دیتے ہیں اور عید سے قبل جانور خریدنے اور ان کی دیکھ بھال کے کام شروع ہو جاتے ہیں، بچے ہوں

یا بڑے یہاں تک کہ خواتین بھی جانوروں کی خوب خدمت کرنے لگتی ہیں جوکہ شرعی طور پر بھی حق ہے اور یہ انسانیت کا پیمانہ بھی ہے کہ انسان کو ہر کسی کا خیال کرنا چاہیئے اور بے زباں جانوروں کا تو سب سے زیادہ کیونکہ یہ اپنی تکلیف زباں سے بیان نہیں کر پاتے۔ جہاں یہ تمام ذمہ داریاں ہیں وہیں قربانی کا گوشت بھی ایک بہت بڑی ذمہ د اری ہے۔قربانی کے 3 دن ہوتے ہیں اور ہر لوگ قربانی کا فریضہ سرانجام دیتے ہیں، جگہ جگہ ڈھیروں گوشت رکھا ہوا نظر آتا ہے، کوئی گوشت کے حصے کر رہا ہوتا ہے، کوئی بانٹتا ہوا نظر آتا ہے تو ہزاروں لوگ ایسے بھی نظر آتے ہیں جو اپنا فریج گوشت کی تھیلیوں سے اتنا بھر لیتے ہیں کہ ایک تھیلی بھی نکالیں تو سارا گوشت ایک ایک کرکے فریج سے باہر نکلنے لگتا ہے۔لیکن قربانی کے گوشت کی دراصل حقیقی و شرعی حیثیت کیا ہے؟ یہ کتنا گھر میں رکھنا چاہیئے، کتنا بانٹنا چاہیئے ؟ یہ کوئی نہیں سوچتا ہے اور جاننے کی کوشش نہیں کرتا لیکن سارا سال اپنا فریج قربانی کے گوشت سے بھرے رکھتے ہیں۔ کیا قربانی اس کا نام ہے؟ کیا خدا نے فریج بھرنےکا

حکم دیا تھا؟ کیا آپ بھی گوشت کے حصوں کو فیج کے ساتھ ان لوگوں میں بانٹ دیتے ہیں جن کو گوشت کی ضرورت بالکل نہیں ہوتی؟ جانیئے اس فیچرڈ نیوز میں گوشت کے حصوں کے حوالے سے اہم باتیں:٭ قربانی کے گوشت کا سب سے پہلا حصہ غریبوں، ضرورتمندوں اور یتیموں کا ہوتا ہے جوکہ مذہبی اعتبار سے ہی نہیں بلکہ انسانیت کے اعتبار سے بھی اہمیت کا حامل ہے کہ آپ ان لوگوں کے لئے گوشت بانٹیں جو خود خرید کر نہیں کھاسکتے یا ان کی گنجائش کم ہے۔ ٭ پھر ایک حصہ اپنے رشتے داروں میں بانٹیں، کیونکہ ان کا بھی حق ہے اور کوشش کریں کہ ان رشتے داروں میں بانٹ دیں جن کے بارے میں آپ کو علم ہے کہ ان کی استطاعت کم ہے، یا وہ روزمرہ ایسی چیزیں نہیں کھاتے، کیونکہ ایک طرح سے ضرورتمند ہی ہوئے۔ مزید خبروں تبصروں تجیزوں اور کالمز پڑھنے اور ہر وقت چوبیس گھنٹے اپ ڈیٹ رہنے اور ملک کے حالات سے با خبر رہنے کیلئے ہمارا پیج لائیک اور شیئر ضرور کریں اور اپنے دوستوں سے بھی شیئر کی درخواست کریں ہم آپ کے بے حد مشکور ہوں گے شکریہ

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *