رواں سال خطبہ حج کون پیش کرینگے؟ سعودی حکومت نے خوش نصیب امام کے نام کا اعلان کردیا

حرمین شریفین کی انتظامی امورکے ذمہ دار ادارے صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین نے خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کی منظوری سے امام کعبہ الشیخ ڈاکٹر بندر بن عبدالعزیز بلیلہ کو خطبہ حج پیش کرنے کی ذمہ داری سونپی ہے۔ڈاکٹر الشیخ بندر بن عبدالعزیز بلیلہ مسجد حرام میں امام اور خطیبہیں اور کبار علما کونسل کے

رکن ہیں۔۔انہیں اس بار میدان عرفات میں خطبہ حج پیش کرنے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ خیال رہے کہ خطبہ حج اہل اسلام کے دلوں پر گہرے اثرات مرتب کرتا ہے۔الشیخ بلیلہ کو 18 اکتوبر2020ء کو سعودی عرب کی کبار علما کونسل کا رکن مقرر کیا گیا تھا۔ وہ 1395ھ کو مکہ معظمہ میں پیدا ہوئے۔ ڈاکٹر بلیلہ ام القریٰ یونیورسٹی میں الشریعہ کالج میں فقیہ اور اسلامک اسٹڈیز میں ایم اے کیا۔ اس کے بعد انہوں نے مدینہ منورہ کی اسلامی یونیورسٹی سے فقہ میں پی ایچ ڈی کیا۔ تعلیم سے فراغت کے بعد مسجد حرام امامت اور خطابت کے فرائض انجام دینا شروع کیے۔ وہ اس کے ساتھ ساتھ طائف یونیورسٹی میں اسسٹنٹ پروفیسرکے طور پربھی خدمات انجام دیتے ہیں۔دوسری جانب حجاج کرام کو مختلف سروسز فراہم کرنے والی کمپنیوں اور اداروں کی رابطہ کونسل نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ رواں سال حج کے موقعے پر کرونا کیایام میں 5 ہزار رضا کاروں پرمشتمل عملہ تشکیل دیا گیا ہے۔رابطہ کونسل کےوائس چیئرمین ڈاکٹر ساعد الجھنی نے عرب ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مشاعر مقدسہ میں حجاج کرام کی خدمت کے لیے پانچ ہزار سے زاید رضا کار بھرتی کیے گئے ہیں۔ یہ رضا کار عازمین حج کو منیٰ، عرفات، مزدلفہ اور دوسرے مشاعر مقدسہ میں خدمات فراہم کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ رواں سال حج کے موقعے پر60 ہزار افراد کی حج کے لیےرجسٹریشن کی گئی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حجاج کرام کو سہولیات کی فراہمی اور ان کی خدمت میں کوئی کسر باقی نہیں چھوڑی جائیگی۔ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر الجھنی کا کہنا تھا کہ اندرون ملک کے حجاج کرام کی خدمت کے لیے کام کرنے والے ادارے اللہ کے مہمانوں کو مناسک کی ادائی کے لیے مناسک ماحول فراہم کیاجائے گا۔ان کا کہنا تھا کہ رواں سال حج کے موقعے پر مختلف کمپنیوں کے55 اتحاد قائم ہیں جن میں 161 ادارے اور کمپنیاں ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *