کورونا لاک ڈاؤن کی وجہ سے جھگی میں رہنے پر مجبور لاہور کی اداکارہ پر دراصل کیا بیتی ؟

لاہور(ویب ڈیسک) معروف سٹیج پرفارمر عالیہ چوہدری کا کہنا ہے کہ زندگی میں اتنے برے دن بھی دیکھنے تھے یہ سوچا بھی نہ تھا ملک میں لگنے والے لاک ڈاؤن کے باعث میں غربت کی چکی میں پس گئی مجھے کھانے کے لالے پڑ گئے میری جو بھی جمع پونجی تھی وہ کام نہ ہونے کی وجہ سے خرچ ہوگئی، لاک ڈاؤن کے پیش نظر

تھیٹر انڈسٹری بند ہونے سے حالات خرابی کی جانب چل پڑے اور میرے پاس زخمی پاؤں کو چیک کروانے کے لئے پیسے نہیں تھے،عالیہ چوہدری نے بتایا کہ لاک ڈاؤن نے فنکاروں کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے گھروں کے چولہے ٹھنڈے پڑ گئے میں تمام میڈیا،فنکاروں خاص طور پر شوبز پروموٹر عابدکی شکر گذار ہوں جنہوں نے میری بہت زیادہ مالی امداد کی اور جھگیوں سے نکال کر ایک بار پھر سر چھپانے کیلئے گھر دلوانے میں مدد کی۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ میرے پاس اپنے علاج کے لیے پیسے نہیں تھے کھانے کیلئے گھر میں روٹی نہیں تھی کسی بھی بڑے فنکار نے میرے حالات کے بارے میں نہیں پوچھا ہر کوئی اپنی موج مستی میں مصروف رہا۔عالیہ چوہدری نے کہاکہ کافی عرصہ سے میرا پاؤں زخمی ہے جس کا علاج کروانا میرے لیئے ناممکن ہے میں اپنے ساتھی فنکاروں کی مدد کی منتظر تھی جنہوں نے مجھ سے اتنی بے اعتنائی برتی کہ جس کا تصور بھی ممکن نہیں ہے۔یادہ نہیں تھوڑا میرا ساتھ دیا جائے جاتاتاکہ میرا علاج ہو سکتا مجھے یہ وقت ہمیشہ یاد رہے گا میں حکومتی نمائندہ فاطمہ چدھڑ کی بھی شکر گذار ہوں جو میرا حال جاننے کیلئے میرے پاس تشریف لائیں۔عالیہ چوہدری اپنی کسمپرسی پرفنکاروں اور حکومت کی بے حسی پر پھٹ پڑیں۔عالیہ چوہدری کا کہنا ہے کہ میں ان دنوں حالات کی وجہ سے کسمپرسی کی حالت میں زندگی بسر کرنے پر مجبور ہوں۔مجھے بروقت کرایہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے مالک

مکان نے انہیں گھر سے بے دخل کر دیا تھاجس کے باعث میں اہل خانہ کے ہمراہ سبزہ زار میں ایک جھگی میں پناہ لینے پر مجبور ہوئی تھی۔عالیہ چوہدری نے کہا کہ انتہائی دکھ اور افسوس ہے کہ مصیبت کی اس گھڑی میں فاطمہ چدھڑ کے علاوہ کوئی بھی حکومتی نمائندہ داد رسی کے لئے میرے پاس نہیں آیا۔چند فنکاروں کی مدد سے اپنے گھر کا چولہا جلا رہی ہوں جس پر ان کی مشکور ہوں۔انہوں نے کہا کہ میری وزیر اعلیٰ پنجاب اور وزیر اطلاعات و ثقافت سے استدعا ہے کہ میری مجبوری اور مالی حالات کو دیکھتے ہوئے میری مزید مالی امداد کی جائے۔کئی فنکاروں نے جھوٹی شہرت حاصل کرنے کی خاطر میری امداد کرنے کے حوالے سے جھوٹی خبریں چلوادیں جس کا مجھے دلی افسوس ہے۔عالیہ چوہدری نے اداکارہ نرگس کو بڑی اداکارہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایک اچھی ڈانسر اور اداکارہ ہیں ان جیسی اور کوئی اداکارہ موجود نہیں ہے، اداکارہ حنا شاہین نے میری ہر موقع پر حوصلہ افزائی کی جس میں کی میں آج بھی احسان مند ہوں۔ عالیہ چوہدری نے کہا کہ میں نے سات سال قبل شوبز کی دنیا میں قدم رکھا اور مجھے توقع سے بڑھ کر کامیابی ملی اور کامیابیوں کا تسلسل آج تک جاری ہے۔میری زندگی میں سب سے یادگار ڈرامہ ”بلو رانی“ تھا جس میں ڈرامہ شائقین نے نے میری پرفارمنس پر کھڑے ہو کر پانچ منٹ تک تالیاں بجا کر مجھے دادی دی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہر لڑکی کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ شادی کر کے اپنا گھر بسا لے،میری بھی خواہش ہے مگر اس سے قبل کہ میں اپنی اس خواہش کو پورا کرتی پاکستان سمیت دنیا بھر میں کرونا وائرس نے تباہی مچا دی اور میں جھگیوں میں رہنے پر مجبور ہوگئی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.