اپنی ویڈیوسامنےآنے کے بعد کیاکام کرنے کادل کررہاہے؟مفتی قوی نے حیران کن بات کہہ دی

مفتی عزیزالرحمان کا معاملہ ابھی تھما نہیں تھا مفتی قوی کا تنازع کھڑا ہوگیا،سوشل میڈیا پر مفتی قوی کی قابل اعتراض ویڈیو وائرل ہورہی ہیں،ویڈیو میں انہیں ویڈیو کال پر کسی خاتون سے برہ ن ہ حالت میں قابل اعتراض باتیں کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔اس ویڈیو کے حوالے سے مفتی قوی کا کہنا ہے کہ ان کے پاس کمیرے والا موبائل ہی نہیں

تھا تو ویڈیو کال کیسے کرتا،جو ویڈیو مجھ سے منسوب کی جارہی ہے اس میں نظر آنے والی جسامت میری نہیں،کسی نے میری تصویر لگا کر کسی اور کا جسم جوڑا اور میرے نام سے منسوب کردی تاکہ شہرت اور پیسہ کمایا جاسکے۔مفتی قوی کا کہنا ہے کہ جس طرح مفتی عزیز الرحمان کے ساتھ ایک لڑکے کی ویڈیو بنا کر انہیں بدنام کیا گیا، اسی طرح ان کی جعلی ویڈیو بنا کر وائرل کی جارہی ہے۔ یہ وہی لوگ ہیں جو جھوٹی باتیں پھیلا کر ویڈیوز وائرل ہونے سے یوٹیوب کے ذریعے پیسے کماتے ہیں،ایسے افراد علما کی ویڈیوز ایڈٹ کرکے وائرل کرتے ہیں اور انہیں بدنام کیا جاتا ہے، جس کا فائدہ علما کا مخالف طبقہ اٹھاتا ہے۔مفتی قوی نے بتایا کہ گھر والوں نے مجھ سے اینڈرائیڈ فون لے رکھا ہے جبکہ میرے پاس تو 25 سو روپے والاسادہ سا فون ہے۔ میں اس سے ویڈیو کال کیسے کرسکتا ہوں؟مفتی قوی نے وزیراعظم سے مطالبہ کیا کہ وہ اس کا نوٹس لیں اور سائبر کرائم سے متعلق موثر قانون سازی کی جائے تاکہ من گھڑت اور بے ہودہ ویڈیوز کے ذریعے علما کو بدنام کرنے کا سلسلہ بند ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ ویڈیو چند گھنٹوں میں لاکھوں صارفین تک پہنچ چکی ہیں اور شیئر بھی بہت ہو رہی ہے۔ مجھے بھی ایک دوست نے دکھائی ہے، جسے دیکھ کر بہت دکھ ہوا کہ نئی نسل کس طرف جارہی ہے۔سوشل میڈیا پر بھی نئی بحث چھڑی گئی ہے، صارفین کی جانب سے شدید تنقید کی جارہی ہے،صارفین کہتے ہیں مفتی قوی کی ویڈیو دیکھنے کے بعد اب آنکھوں میں تیزاب ڈالنے کا دل کر رہا ہے،بیا علی زیب نے لکھا کہ مفتی عزیز اور مفتی قوی جیسے لوگ دیگر مفتیوں کا نام بدنام کر رہے ہیں، جو اپنے فرائض بہترین طریقے سے انجام دے رہے ہیں،ایک اور صارف نے لکھاکہ میں حیران ہوں کہ کیا مفتی قوی شادی شدہ ہیں اور کیا ان کے اہل خانہ ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.