ط ل ا ق پیپل کے پتے سے۔ اس سے ط ل ا ق سو فیصد ہو گی شر طیہ۔

درخت کی اہمیت اور افادیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا دور قدیم سے لوگ اپنے گھروں کی خوبصورتی بڑھانے کے لئے درخت لگاتے رہے ہیں لیکن دور جدید میں گھروں میں درخت لگانے کا رحجان کم ہوتا جا رہا ہے خاص طور پر شہری آبادیوں میں اسکا رحجان نہ ہونے کے برابر رہ گیا ہیں اور اسکی جگہ مصنوئی

پودوں نے لے لی ہے۔درخت اگانا کبھی بھی غیر منافع بخش نہیں رہا یہ دھوپ اور دیگر موسمی اثرات سے محفوظ رکھنے کے ساتھ ساتھ مفید پھل بھی فراہم کرتا ہے لیکن کچھ درخت ایسے بھی ہیں جن سے پھل حاصل نہیں ہوتے لیکن اسکا ہرگز مطلب یہ نہیں کے انکا کوئی فائدہ نہیں قدرت نے کسی بھی چیز کو بغیر وجہ کے پیدانہیں کیا۔ان میں سے ایک پیپل کا درخت بھی ہے جو ایک صدی پہلے تک گھروں میں اور مختلف جگہوں پر با کثرت نظر آتے تھے لیکن بنا پھلوں والا یہ درخت اب بہت کم ہی دیکھنے میں آتا ہے۔ پھل نہ فراہم کرنے والے اس درخت میں قدرت نے بہت سے انمول فوائد چھپا رکھے ہیں پیپل کے تنے، جڑوں اوربیجوں سے لے کراس کے ننھے پتوں میں بھی بے شمار فوائد چھپے ہیں۔وہ فوائد مندرجہ ذیل ہیں۔بخار کے علاج کے لئے پیپل کے چند پتے لے کر اسے دودھ کے ساتھ گرم کر لیں اب اس میں تھوڑی چینی شامل کریں اور چھان کے دن میں دو بار استعمال کریں بخار کے علاج کے لئے بہترین نسخہ ہے اسی نسخے سے دمہ کا علاج بھی کیا جا سکتا ہے ۔سرد موسم کے آغاز سے ہی ایڑیاں اور جلد پھٹنا شروع ہو جاتی ہے اور اگر پھٹی ایڑیوں کا علاج نا کیا جائے تو اس سے خون رسنا شروع ہو جاتا ہے جو تکلیف کا سبب بنتا ہے پیپل کے نرم پتوں کا رس لے کر پھٹی ایڑیوں اور

سردی سے متاثرہ ہاتھوں پرلگائیں یہ جلد سے سردی کا اثر ختم کرنے کے ساتھ ایڑیوں کو نرم ملائم بھی بناتا ہے۔ پیپل کے پتوں سے آنکھوں کے مختلف امراض اور آنکھوں میں درد کا علاج بھی ممکن ہے پیپل کے پتوں سے حاصل کیا جانے والے دودھ کو آنکھوں میں ڈالنے سے آنکھوں کا درد کم کیا جا سکتا ہے ۔کھانسی، دمہ یا استھما کے مرض میں مبتلا افراد پیپل کے درخت کے تنے کی چھال اورپھل ہم وزن لے کران کا الگ الگ سفوف بنالیں بعد ازاں اس سفوف کو ملالیں اور 2 سے 3 گرام سفوف شامل کر کے دن میں دو بار پانی کے ساتھ کھائیں۔پیپل کے پتوں کا سفوف ، بدین کے پھول اور گڑ تمام اجزا ہم مقدار لے کر دودھ میں شامل کر کے سونے سے پہلے استعمال کریں اسکے استعمال کے بعد صبح تک کچھ نا کھائیں اورنا پئیں قبض کا بہترین علاج ہے ۔دو سے ڈھائی عدد پیپل کے پتے لیں اور اس کا پیسٹ بنالیں پھر اس میں پچاس گرام گجک(مونگ پھلی اور گڑ)کے ساتھ ملاکر چھوٹی گولیاں بنالیں اور دن میں تین سے چار بار یہ گولیاں کھائیں۔ یہ پیٹ کے درد میں آرام دلانے کے لیے بے حد موثر دوا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.