جس میں یہ چیز دیکھو۔ تو سمجھ جاؤ وہ تم سے سچی محبت کر تا ہے

اگر تجھ سے کسی سوال کا جواب نہ آ رہا ہو تو خاموش رہ ممکن ہے تیرے جواب کی ضرورت ہی نہ ہو۔ اُن لوگوں سے ہمیشہ بچ کے رہو جو علماء کی تحریریں توڑ مروڑ کے پیش کر تے ہیں۔ مجذوب کی کیفیت جہل نہیں علم ہے۔ اللہ کے ساتھ صبر کر و اور اس سے ڈرتے رہو بلا شبہ اس وقت ذلیل و خوار

ہو جا تا ہے جب اسے اللہ پر بھروسہ نہیں رہتا۔ نفس کی پیروی چھوڑ دو اور اس کی طر ف اپنا رُخ پھیر و جو سچا ہےا ور سچائی کی تصدیق کر تا ہے۔ اگرچہ سمندر میں گہرائی ہو تی ہے لیکن دل کا ساحل سب سے زیادہ گہرا ہے۔ جب وہ تجھے نہ دے تو یہی اُس کی عطا ہے اور جب وہ تجھے عطا کر ے تو یہ اس کا نہ دینا ہے تولینے سے نہ لینا بہتر ہے۔ جو شخص اللہ کے قوانین کی نافرمانی کر ے اُسے کبھی عزت حاصل نہیں ہو نی چاہیے اس کی شہرت آسمانوں کو چھوتی ہو۔!!! جب بھی حضرت محمد ﷺ کا خیال میرے دل میں آتا ہے تو میں اپنے اعمال کا سوچ کر شرمندہ ہو جا تا ہوں۔ جو آنسو ہم بہاتے ہیں وہ ہمارے دل کے باغ کو سیراب کر تے ہیں۔ پریشانی تو آ تی جا تی ہے اور آتی جا تی رہے گی تم بس اللہ سے اُمید مت ہا رنا۔ انسان کی حفاظت دراصل اُسکی م و ت کا مقررہ وقت کر تا ہے۔ اللہ کا حساب سب کے لیے یکساں ہے۔ جو بیج اپنے چھلکے کو اُترنے نہ دے وہ کبھی ایک پھل دار درخت نہیں

بن سکتا۔ جس میں یہ چیز دیکھو تو سمجھ جاؤ وہ تم سے سچی محبت کر تا ہے اگر وہ تم سے محبت صرف تمہارے لیے کر ر ہا ہے تو اس کی محبت پر اعتماد کر لو کیوں کہ یہی سچی محبت ہے۔ جیسا کہ میں نے پہلے بھی یہی بات کی ہے کہ اللہ تعالیٰ نے ہمیں اشرف المخلوقات بنا یا ہے مگر ہمارے کام جو ہیں ہمارے اعمال جو ہیں وہ اشرف المخلوقات والے نہیں ہیں ہم چاہتے ہیں کہ ہم سب سے اعلیٰ ہوں سب سے اچھے ہو ں لیکن ہم جھکنا نہیں جانتے ۔ ایسا کیوں ہے؟آخر ایسا کیوں ہے؟ ہمیں اپنےآپ کو مقام کوئی مقام دینے کے لیے ایک اچھی سوچ بہال کر نی پڑے گی اور اس کے ساتھ ساتھ ہمیں وہ کام کرنے پڑیں گے جو ہمارے ملک کے لیے ہماری قوم کے لیے بہت ہی زیادہ مفید ہوں جو ہماری خود کی ذات کے لیے بھی مفید ہوں۔ تو ہمیں چاہیے کہ ہم اچھے فیصلے کر یں۔ اللہ تعالیٰ کا بھی فر مان ہے کہ جس نے بھی میرا احکامات ما نے اس کے لیے ہم نے زندگی کو آسان بنا دیا۔ اگر ہم اس بارے میں بات کر نا بھی چاہتے ہیں تو اس سے ہماری زندگی جو ہے وہ بہت آ سان ہو جا ئے گی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.