بسم اللہ الرحمٰن الرحیٰم کا وظیفہ

اللہ تعالیٰ نے مسلمانوں کو بعض مختصر ترین چیزوں میں بڑی ہی برکت عطافرمارکھی ہے ۔ اور انہی چیزوں میں سے ایک چیز جسے ہم روزانہ کئی مرتبہ دن کےوقت پڑھتے ہیں۔ “بسم اللہ الرحمن الرحیم ” یہ ایسے کلمات ہیں کہ دنیا کا بدبخت ترین انسان ہوگا ۔ جسے یہ الفا ظ بھی نہیں ہوتے۔ اس آیت کے ذریعے اللہ تعالیٰ کی

غیبی مدد حاصل ہوتی ہے۔ اس چھوٹی سی آیت میں اس قدر طاقت ہے کہ کوئی عام مسلمان اس کا تصور بھی نہیں کرسکتا۔ ہمارے پاس اس جیسی قوت ، طاقت ہونے کے باوجود اگر ہم مایوس ہوتے ہیں تو یہ بڑے افسو س کی بات ہے۔ رسول اللہ ﷺنے فرمایا کہ :مجھ پر ایک ایسی آیت اتری ہے کہ کسی نبی پر سوائے حضرت سلیمان ؑ کے ایسی آیت نہیں اتری۔ وہ آیت ” بسم اللہ الرحمن الرحیم ” ہے۔ حضرت جابر رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ جب یہ آیت اتری نازل ہوئی۔ بادل مشرق کی طرف چھٹ گئے۔ ہوائیں ساکن ہوگئیں۔ سمند ر ٹھہر گیا۔ جانوروں نے کان لگا لیا۔ شیاطین پر آسمان سے شعلے گرنے لگے ۔ پررودگار عالم نے اپنی عزت وجلالت کی قسم کھا کر فرمایا : جس چیز پر میرا نام لیا جائے گا اس میں ضرور برکت ہوگی۔ حضرت عبداللہ بن مسعود سے روایت ہے کے جو کوئی بسم الله شریف کا ورد ہر روز بکثرت کرے انیس ١٩ فرشتوں کے عذاب سے نجات پاے گا جو کے دوزخ پی مؤکل ہیں ق کے بسم الله شریف کے الفاظ بھی انیس ١٩ ہیں جب کوئی مشکل در پیش ہو تو بسم الله شریف کو با طہارت کامل سات سو چھیاسی ٧٨٦ بار سات ٧ روز تک پڑھے ہر مشکل آسان ہو اگر ہمیشہ ورد میں رکھے۔آپ کو عمل بتانے لگے ہیں۔ “بسم اللہ ” سے زندگی آسان بنتی ہے۔ روزی کی پریشانیاں ، رشتوں کی بندشیں ، مالی مشکلات ، گھریلو ناچاقیاں، اولا دوں کی نافرمانیاں، پہاڑجتنا قرض ، نہ علاج ،

دکھ اور تکلیفیں اور بیرون ملک کی خواہش ، حج کی تڑ پ ، اپنا گھر، اپنی سواری ، گھریلو الجھنوں کا خاتمہ ، ناممکن مشکلا ت کا خاتمہ الغرض کو ئی بھی حل نہ ہونے والا مسئلہ ” بسم اللہ الرحمن الرحیم ” کے وظیفے سے وہ مسئلہ پایہ ء تکمیل تک پہنچ جاتا ہے۔ اب اس کا عمل آپ نے کس طرح کرنا ہے؟ اپنی زندگی میں جب بھی موقع ملے ۔ جب بھی اللہ ہمیں نبی کریم ﷺ کا صدقہ اس کا وظیفہ کرنے کی توفیق عطافرمائے تو یقین جانیے کہ یہ سونےپر سہاگہ ہے۔ اور اللہ تعالیٰ کی کرم نوازی ہے۔ آپ نے باوضو حالت میں نبی کریمﷺکی ذات والا صفات پر درود پاک پڑھنا ہے۔ سات سات مرتبہ درود پاک پڑھناہے۔ اور درمیان کےا ندر آٹھ سو مرتبہ ” بسم اللہ الرحمن الرحیم ” پڑھ لیں۔ چاہے وہ ایک ہی مجلس میں پڑھ لے۔ یا دوتین دنوں میں پڑھ لے۔ بہتر یہی ہوگا کہ ایک ہی دن میں پڑھ لے۔ خود پڑھ لے ۔ یا گھر کے سارے افراد مل کر ، بیٹھ کر اپنے حصے کی تھوڑی تھوڑی سی گنتی لاکر ا س کی آٹھ سو تعدا د پوری کریں۔ اب شعبان کا مہینہ چل رہا ہے اس کے اندر اللہ تعالیٰ کی رحمت ایسے متوجہ ہوگی ۔ کہ ہرحال میں اللہ تعالیٰ کامیابی اس پڑھنے والے کو عطافرماتے ہیں۔ اس کے مقدر بلند ہوتا ہے۔ تو ہمیں چاہیے کہ “بسم اللہ ” کے اس عمل کو اپنی زندگی کےا ندر ایک مرتبہ ضرور کریں۔ ” بسم اللہ ” شریف کا ایک ایسا طاقت ور وظیفہ ہے۔ جو ہر مشکل کو چیر کر رکھ دے۔ ہر کام میں اللہ کی مدد ملے۔ دنیا کا ہر اٹکا ہوا مسئلہ حل ہو۔ دولت ہو۔ قرض ہو۔ وافر رزق کی خواہش ہو۔ ذہنی سکون کی خواہش ہو۔ کہ مخلو ق بھی پریشان ہوجائے۔ گھریلو لڑائیاں جھگڑے ختم ہوجائیں ۔ یہ بے شمار لوگوں کا آزمودہ وظیفہ ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.