سچاواقعہ اگر آپ صبح 5 سے 7 کے درمیان اٹھتے ہیں

تمام تعریفیں اللہ ہی کےلیے ہیں۔ وہی نیک لوگوں کا ولی ہے وہی سارے جہاں کو اکیلا پالنے والا ہے میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ کے سوا کوئی بھی معبود برحق نہیں ۔ وہ یکتا ہے اس کا کوئی شریک نہیں ۔ وہی صرف ایک مشکل کشا ہے۔ اور حاجت روا ہے ۔ وہی دعاؤں کو قبول کرنے والا ہے۔ وہی مخلوقات کا معبود برحق

ہے۔ اور میں یہ بھی گواہی دیتا ہوں۔ ہمارے نبی پاکﷺ اللہ کے بندے اور اس کے رسول ہیں۔ آپ تما م انبیائے کرام اور رسولو ں کے سربراہ ہیں۔ یا اللہ ! ان کی آل اور تمام صحابہ کرام رضی اللہ عنہم پر رحمتیں اور برکتیں نازل فرما۔ ساراسال سے اسلامک ٹیچر کی کوشش رہی ہے کہ دکھی انسانیت کے دکھ درد کم کیے جائیں بلکہ سارے عالم کے انسانوں کی ترقی اور سلامتی کے لیے محنت کی جائے ۔ اور اس محنت رنگ ونسل اور مذہب کا امتیاز نہ ہو۔ یہ ایک بے لوث ادارہ ہے ۔ جس کامقصد امت کے اخلاقی قدروں کو بہتر کرنا۔ معاشرتی اور دنیاوی برائیوں کا احساس اجاگر کرنا۔ اور امت کی دنیا وآخرت ان گنت مسائل کا حل قرآن وسنت اور اہل اللہ کے طریقے سے کرانا۔ آپ کو اللہ کی ولیوں کا بتایا ہوا ایک ایسا عمل بتائیں گے جس عمل کو صبح پانچ بجے سے سات بجے کے درمیان کرنے سے آپ کا پور ا دن اچھا گذرتا ہے دکھ درد اور غم دور ہوجاتے ہیں۔سارے دن کی حاجتیں پوری ہوتی ہیں۔ انسان ہزاروں خواہشیں گھر سے لے کر نکلتا ہے۔ اور اللہ لاکھوں عطا کرتے ہیں۔ یہ وظیفہ جس بہن بھائی صبح دن کے آغا ز میں کیا ہے ایسے لاکھوں لوگوں کی داستانیں ہیں جن کی زندگی اس وظیفے سے بدل گئی ہے۔ اور ان کا ذکر علمائے کرام نے کتابوں میں کیا ہے۔ علمائے کرام نے کتابوں میں لکھا ہے کہ اگر صبح کے وقت کسی بھی ضروری کام کے لیے گھر سے باہر قدم رکھتے ہیں تو گھر

چھوڑنے سے قبل 33 مرتبہ قرآن پاک کی چھوٹی سی آیت ” بسم اللہ الرحمن الرحیم” کو پڑھ لیں۔ انشاءاللہ! آپ کا سارادن اچھا گزرے گا۔ اگرآپ دولت کے حصول کے لیے گھر سے باہر نکل رہے ہیں۔ تو “بسم اللہ الرحمن الرحیم ” 33 مرتبہ پڑھ لیں۔ اگر آپ لاکھوں کا فائدہ سوچ رہے ہیں۔ تو اللہ تعالیٰ اپنے خزانوں سے کروڑوں کافائدہ دے گا۔ گذشتہ دنوں ایک بہن کا تفصیلی میسج موصو ل ہوا ۔ وہ اسی وظیفے کی برکات کےبارے میں بتانے لگیں کہ میں اسی ” بسم اللہ “کا وظیفہ گذشتہ دس سال سے پڑھ رہی ہوں۔ میرے گھر کے حالات دیکھتے ہی دیکھتے بدل گئے۔ خالی جیبیں بھر گئیں۔ ایمان کی بے بہادولت اور نیک سیرت اولاد بھی اللہ نے دی۔ میں اس وظیفہ پر پختہ یقین سے کئی لوگوں کو پڑھنے کو دے چکی ہوں۔ لیکن اس وقت میں ایک اہم واقعہ کا بتاتی ہوں۔ میرے کلاس فیلو جو کبھی کبھی مجھ سے اپنی بچی کی پڑھائی کے سلسلے میں ملنے آتی تھیں۔ میں ٹیچر ہوں۔ اس کا شوہر فوج میں ملازم تھا۔ جوائنٹس فیملی میں رہتی تھی ۔ اس کےپانچ دیور سب شادی شدہ ۔ سب بھائیوں نے فیصلہ کیا۔ کہ چاروں بھائیوں کو حصہ دے کر دو بھائی اس مکان میں رہیں۔ اور باقی الگ گھر بنائیں ۔ طے شدہ رقم میرے دوست کا شوہر لے کر کیا کرتا۔ جو ایک گھر تو کیا اس کی جگہ خریدنے کےلیے ناکافی تھا۔ اسے مزید پیسے جمع کرنے تھے تاکہ زمین خرید سکے ۔ کئی رشتہ داروں سے مانگے کہیں کامیابی

نہ ہوئی۔ اسی سلسلے میں وہ میرے پاس آئی۔ پیسہ نہ مانگے مگر سارا واقعہ سنایا۔ اس کے بات جب جاری تھی تو دل میں سوچ رہی تھی کاش اس کی مدد کرسکوں۔ اور سوچنے لگی شاید یہ مجھ سے مدد کی توقع رکھتی ہے۔ اس کی بات مکمل ہونے پر میں نے پوچھا تم پانچ وقت کی نماز پڑھتی ہو۔ اس نے کہاہاں۔ میں نے کہا روزانہ صبح اٹھتے وقت 33 مرتبہ لازمی خود بھی ” بسم اللہ” پڑھو اور اپنے خاوند سے بھی کہو وہ بھی لازمی ” بسم اللہ” پڑھا کریں۔ وہ چلی گئی ۔ دل بھر کر اس کے لیے دعا کی ۔ صبح میرے سکول میں ملنے آئیں۔ اس کی آنکھوں میں آنسو تھے اور گلے لگا کر چومنے لگی ۔ میں حیرت زدہ ہوگئی۔ جب اس نے بتایا کہ گذشتہ رات میرے شوہر کو ہیڈکوارٹر سے فون آیا۔ کہ اس کا نام اس ٹیم میں شامل کرلیاگیا ہے جوامریکہ جارہی تھی تنخواہ کےعلاوہ اس کووہاں پر ڈالر ز میں بھی اچھی خاصی رقم ملی ۔ جگہ خرید کر آرام سے گھر بناسکتا ہے۔ آج ڈیڑھ سال ہوچکے ہیں۔ اس کا شوہر سال پہلے ہی امریکہ جاچکا ہے۔ آج انہوں نے اپنا گھر بھی بنالیااور ہنسی خوشی زندگی گزار رہے ہیں۔ میں نے کہا اس وظیفہ کوساری زندگی کرتی رہنا۔ انشاءاللہ!تمہاری ہرکام میں خدا مدد کرے گا۔ یہ کوئی معمولی آیت نہیں ہے۔ اللہ تعالیٰ نے مسلمانوں کو بعض چھوٹی چھوٹی چیزوں سے بڑی برکت عطافرمائی ہے۔ “بسم اللہ ” بھی انھی میں شامل ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.