ادھر وظیفہ پڑھا ادھر میرا کام بھی ہو گیا

ناظرین و سامعین آج کی اس بات میں اسمِ مبارکہ کے وظیفے پر مشتمل ہے۔ ہر کام میں برکت اور آ سانی کے لیے یہ نہایت ہی مجرب وظیفہ ہے۔ یہ اللہ پاک کی اسمِ مبارکہ کا وظیفہ ہے اور وہ اسمِ مبارکہ ہے “یا متکبر” قربِ الٰہی حاصل کرنے کے لیے یہ وظیفہ نہایت ہی مجرب اور نہایت ہی مفید ہے۔ عظمت اوربر

تری صرف اللہ تعالیٰ کو زیب دیتی ہے کیونکہ حقیقت میں وہ سب سے بڑا ہے دونوں جہانوں کی تمام چیزیں اس کی مخلوق اور تابع ہے۔ اور مخلوق اپنے خالق سے کبھی بھی بڑی نہیں ہو سکتی چنانچہ بڑائی صرف اللہ تعالیٰ کی ذات کے لیے ہی ہے اور کا ئنات کی ہر شئے اللہ تعالیٰ کے تابع ہے ۔ ہر شئے کم حیثیت رکھتی ہے اللہ کے سامنے۔ اگر اس کائنات میں عظمت والی شان ہے تو وہ صرف اللہ تعالیٰ کی شان ہے۔ جب اللہ کے اس صفت ذکر کیا جاتا ہے تو اس سے مراد اس صفت کی کامل تصویر کا مکمل اظہار ہے۔ اس صفت میں جتنی بھی باتیں پائی جاتی ہیں۔ وہ درجہ ِ کمال پر اللہ تعالیٰ کے اس صفت میں موجود ہوتی ہیں۔ کوئی اور انسان یا کوئی اور مخلوق اس صفت کو نہیں پا سکتا۔ اس صفت کا مطلب متکبر کا مطلب اپنی ذات کے سامنے ہر چیز کو حقیر کم تر سمجھنا اور اپنی ذات کے لیے اعلیٰ محسوس کر لینا اور غیر کی طرف ایسے دیکھ لینا کہ جیسے بادشاہ غلاموں کو دیکھتا ہے۔ یاد رکھنا کہ بڑائی کی ذات صرف اور صرف اللہ تعالیٰ کی ذات کے لیے ہی

ہے۔ اس اسمِ مبارکہ کا وظیفہ ہے۔ جو شخص اس اسمِ مبارکہ کو پڑھنے کا معمول بنا لیتا ہے اور پڑھنے کا معمول بھی چھ سو بارہ مرتبہ کا ہے۔ اور اول و آ خر پانچ پانچ مرتبہ درودِ پاک بھی پڑھتا ہے تو اللہ تعالیٰ اس کے ہر کام میں برکت ڈال دیتے ہیں۔ حقیقت میں اس اسم کے پڑھنے سے انسان کے اندر تبدیلیاں پیدا ہونا شروع ہو جاتی ہیں۔ اس کا تکبر اورغرور ٹوٹ جا تا ہے اور وہ اللہ کی مخلوق کے ساتھ اچھے سلوک اور اخلاق سے پیش آ تا ہے اور اللہ کی مخلوق کی مدد کر تا ہے اور ان تمام اعمال کی وجہ سے اس کے ہر کام میں بر کت پیدا ہو جاتی ہے۔ حضرت فضل شاہ ؒ نے ارشاد فر ما یا کہ جو شخص اپنے ہر کام کی ابتداء میں اسمِ مبارکہ کو ایک ہزار مرتبہ اول و آخر پانچ پانچ مرتبہ درودِ ابراہیمی کے ساتھ پڑھے تو اس کا ہر کام پایہ تکمیل تک پہنچ جاتا ہے۔ اس اسم کی برکت سے اللہ پاک ہر کام آ سان فر ما دیتے ہیں۔ اور اس عمل کے اول و آخر بھی لازمی پڑھنا ہے۔ درودِ پاک زندگی کی پریشانیاں اور مشکلات درودِ پاک پڑھنے سے حل ہو جاتی ہیں۔ امید ہے کہ میری بات آپ کو پسند آ ئی ہو گی ۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *