ذوالقعدہ کی آمد آمد یہ عمل لازمی کر یں۔ چاند دیکھ کر آسمان کی طرف منہ کر کے یہ تسبیح پڑھیں۔

آج جو میں آپ کے لیے وظیفہ لے کر آیا ہوں جو کہ آپ کے لیے بہت ہی زیادہ فائدہ مند ہے ۔ ہم جو بھی آپ کے لیے وظائف لے کر آ تے ہیں ان میں فوائد ہی فوائد ہو تے ہیں ۔ یہ جو وظیفہ ہے یہ آپ نے ذوالقعدہ کا چاند دیکھ کر یہ وظیفہ کر نا ہے جیسا کہ آپ سب لوگ ہی جا نتے ہیں کہ ہر وظیفے

میں بہت طاقت ہو تی ہے ہر وظیفہ کوئی نہ کوئی خواص رکھتا ہے جس کی وجہ سے وہ نا یا ب ہو جا تا ہے ہر وظیفے کا کوئی نہ کوئی مقصد ضرور ہو تا ہے اور یہ جو وظیفہ آج میں آپ لوگوں کو پیش کرنے کے لیے جا رہا ہوں اس وظیفے سے آپ کی جو بھی مشکلات ہیں وہ حل ہونے والی ہیں۔ ذی القعدة الحرام ہجری کیلنڈر کا گیارہواں اور چار حرام مہینوں میں سے ایک ہے جن میں جنگ و جدال حرام ہے۔ “ذی” کے معنی “مالک” و “صاحب” کے اور “القعدہ” کے معنی “بیٹھنے” کے ہیں۔ اس مہینے میں جنگ حرام ہونے کے پیش نظر عرب اس مہینے میں جنگ اور قتال ترک کرکے بیٹھ جایا کرتے تھے اسی وجہ سے اسے ذو القعدہ کا نام دیا گیا۔ اس مہینے میں آپ کو ایک ایسی تسبیح بتانے کے لیے جا رہا ہوں کہ جس تسبیح کےپڑھنے سے آپ کی جو مشکالت ہیں وہ حل ہو جا ئیں گی۔ اللہ ہم سب کو ہر قسم کی مشکلات سے دور فر ما ئے آمین۔ یہ وظیفہ بہت ہی مفید ہے وہ میں لے کر آپ کی خدمت میں حاضر ہوں یہ وہ مہینہ ہے جس

سے عالمِ اسلام کے اندر ہی کیا پوری دنیا کے اندر جو ہے اہمیت حاصل ہے۔ اسلامی سال میں شوال کے بعد آنے والے مہینے کا نام ذوالقعدہ ہے اس کی وجہ یہ ہے کہ اہلِ عرب جنگ وغیرہ سے الگ ہو کر اس مہینے میں بیٹھ جا یا کر تے تھے ذوالقعدہ اسلامی سال کا گیارہواں مہینہ ہے ۔ اور یہ وہ مہینہ ہے کہ اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے کہ اللہ کے نبی اس مہینے اس روز سے جب کہ اس نے آسمانوں اور زمینوں کو پیدا کیا گنتی میں بارہ ہیں اور اللہ کی کتاب میں بارہ مہینے لکھے ہوئے ہیں اور اس میں سے چار مہینے خصوصی ادب و احترام کے ہیں حضرت ابو بکر کی رویات میں اس طرح آیا ہے کہ اسی اصل حالت پر لوٹ آ یا جیسا کہ اللہ تعالیٰ نے اسے آسمانوں اور زمین کی تخلیق سے مقدر فر ما یا تھا سال بارہ مہینوں کا ہو تا ہے اور ان میں سے چارمہینے ادب و احترام والے ہیں جن میں سے تین مہینے مسلسل ہیں ایک مہینہ رجب کا ہے جو شعبان کے درمیان آ تا ہے ان مہینوں کو بر کت والا مہینہ کہا جا تا ہے۔ اس لیے کہ ان مہینوں میں ق ت ل حرام ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *