رمضان کے آخری جمعہ سورۃ یٰسین کا غیبی وظیفہ۔

جیسا کہ ہم سب ہی جانتے ہیں کہ رمضان کا آخری عشرہ شروع ہو چکا ہے اور اس میں جمعہ کا دن بھی آ نا ہے تو ہمیں پتہ ہو نا چاہیے کہ یہ جو آخری جمعہ ہےا س کی کتنی فضیلت ہے ۔ اللہ تعالیٰ نے تمام مخلوقات کی طرح انسان کو خلق کر کے اس پر احسان فرمایا اور تمام مخلوقات میں سے صرف انسان کو زمین

پر اپنا خلیفہ مقرر کر کے اپنے لطف و کرم سے نوازا۔ اللہ تعالیٰ نے انسان کو اپنی بندگی اور اطاعت کے لیے پیدا کیا ہے اور دعا و عبادت کے ذریعے اپنے خالق سے مربوط رہنے کا حکم دیا ہے۔آج ماہ رمضان کا آخری جمعہ ہے کہ جس میں دعا، نوافل اور طلب مغفرت کی بہت زیادہ تاکید کی گئی ہے۔ کتاب وسائل کی دسویں جلد میں مذکور ہے کہ علی بن موسی بن طاووس نے اپنی کتاب الاقبال میں اور شیخ جعفر بن محمد دوریستی نے اپنی کتاب الحسنی میں لکھا ہےجابر بن عبداللہ انصاری کہتے ہیں ایک دفعہ میں ماہ رمضان کے آخری جمعہ میں رسول خدا(ص) کی خدمت میں حاضر ہوا رسول خدا(ص) نے میری طرف دیکھ کر فرمایا اے جابر یہ ماہ رمضان کا آخری جمعہ ہے لہٰذا اسے الوداع کہو اور یہ دعا پڑھو:(اللّهمّ لا تجعله آخر العهد من صيامنا إيّاه، فإن جعلته فاجعلني مرحوماً ولا تجعلني محروماً، فإنّه من قال ذلك ظفر بإحدى الحسنيين: إمّا ببلوغ شهر رمضان من قابل، وإمّا بغفران الله ورحمته).تاب النمارق الفاخرة إلى طرائق الآخرة میں سید علامہ خطیب محمد صالح بن حجۃ سید موسوی

بحرانی لکھتے ہیں۔ کہ رمضان کے آخری جمعہ میں چار رکعت نماز پڑھنے کی بہت تاکید کی گئی ہے جس کا طریقہ یہ ہے:چار رکعتوں کو ایک تشہد کے ساتھ پڑھے اور ہر رکعت میں ایک مرتبہ سورہ فاتحہ پندرہ مرتبہ سورہ قدر اور پندرہ مرتبہ سورہ کوثر پڑھے اور جب نماز پڑھنے کی نیت کرے تو نیت اس طرح سے کرے: مجھ سے جتنی بھی نمازیں قضا ہوئی ہیں ان کے کفارہ کے طور پر چار رکعت نماز پڑھتا ہوں۔ جب نماز پڑھ کر فارغ ہو جائے تو 100 مرتبہ درود پڑھے اور ایک مرتبہ یہ دعا پڑھے: اسی نماز کے بارے میں رسول خدا(ص) نے فرمایا:جس شخص کی زندگی میں نمازیں ۔ چھوٹ گئی ہیں اور وہ ان کی تعداد کو نہیں جانتا تو اس چاہیے کہ وہ ماہ رمضان کے آخری جمعہ میں یہ نماز پڑھےجو بھی یہ نماز اور یہ دعا پڑھے گا تو یہ چار سو سال کا کفارہ شمار ہو گا۔تین دن کا یہ وظیفہ آپ نے ضرور کر لینا ہے قرآنِ پاک کی سورۃ مبارکہ کا یہ وظیفہ ہے سورۃ یٰسین کا وظیفہ ہے ایک حدیث ِ مبارکہ کا مفہوم ہے کہ نبی اکرم ﷺ نے ارشاد فر ما یا کہ ہر چیز کا دل ہو تا ہےا ور قرآنِ پاک کا دل سورۃ یٰسین ہے یہ وظیفہ آپ کی ہر مشکل کو آسان کر دے گا۔ تو آپ نے یہ وظیفہ کسی بھی نماز کے وقت دن میں کسی بھی وقت کر لینا ہے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.