گلے کی خرابی اور گلے کی سوزش کا علاج

جتنے لوگوں کاگلا خراب ہے دوائی نہ کھاؤ ۔ ہلدی لو۔ گلا خراب ہوگیا ہے توکیا کرنا ہے؟ ہلدی لینی ہے۔ اپنی انگلی کو گیلا کرو۔ اور ہلدی لگا کر اپنے گلے اندر پوری طرح سے اس کا لیپ کردو۔ ایک گلاس پانی لو اور اس میں ہلدی کو ڈال دو۔ اور اس میں تھوڑا سا نمک ڈال دو۔ اور اس کےپانی کے غرارے کرو۔ گلہ خراب ہے

چاہے پچاس سے خراب ہے۔ یہ جو بچے کے ٹانسلز بڑھ جاتے ہیں۔ ان کا آپریشن نہ کرواؤ۔ تین دن ، پانچ دن ، سات دن ہلدی لگانےسے گلے ٹھیک ہوجاتے ہیں۔ کسی کو دمہ ہے کسی کو کھانسی ہے سجدہ لمبا کر ا ؤ سجدہ لمبا کر ا ؤ جتنا لمبا سجدہ کر و گے یہ پھیپھڑوں کا کوئی پرابلم ہے کوئی مسئلہ ہے لمبا سجدہ کرو۔ اور اس کے ساتھ ادرک لہسن اور دال چینی اس کا قہوہ بنا ؤ دو کپ پانی لو ایک انچ کا ٹکڑا ادرک کا لو تین تریاں لہسن کی لو تین انچ کی دو ڈنڈیاں دال چینی کی لو اس کو ا تنا پکاؤ اتنا پکاؤ دو کپ آدھا کپ رہ جا ئے اس کو چھان لواس میں شہد میں ملا ؤ صبح و شام دو ٹائم یہ قہوہ دو اس کے ساتھ جس کو دمہ ہے اس کو یخنی پلا ؤ اس کو دیسی مرغی کی یخنی پلا ؤ اس کو مٹن کی یخنی پلا ؤ کالے چنے کا ان کو شوربہ پلاؤ اور لمبا سجدہ کر ا ؤ بہترین علاج ہے۔ کھانسی کی تکلیف کا سامنا کس شخص کو نہیں ہوتا اور اکثر یہ مختلف مشکلات کو بڑھانے کا باعث بنتی ہے۔اگر آپ کھانسی کے شک ار ہیں تو کسی مہنگی دوا یا ڈاکٹر سے رجوع کرنے سے قبل ان قدرتی نسخوں کو استعمال کرکے دیکھیں جو آپ کو گھر بیٹھے آرام دلا سکتے ہیں۔شہد، السی اور شہدالسی کے بیجوں کو پانی میں ابالنے سے ایک گاڑھا جیل بن جاتا ہے جس میں شہد اور لیموں کا اضافہ کھانسی میں کمی لاتا ہے۔ یہ سیرپ یا شربت کھانسی کے لیے زبردست ثابت ہوتا ہے۔ اس کے لیے آپ دو سے تین چائے کے چمچ السی کے بیجوں کو ایک کپ پانی میں اس وقت تک ابالیں جب تک پانی گاڑھا نہ ہوجائے۔ پھر اس میں تین تین، چائے کے چمچ شہد اور لیموں کے عرق

کو ملائیں۔اس کے بعد ضرورت پڑنے پر چائے کے ایک چمچ کے ذریعے اسے استعمال کریں۔گیلی کھانسی کے لیے کالی مرچ کی چائےکالی مرچ بلغم کو حرکت میں لاکر اس میں کمی لاتی ہے۔ اس چائے کو بنانے کے لیے ایک چائے کا چمچ کالی مرچ اور دو چائے کے چمچ شہد کو ایک کپ میں ڈال کر اسے ابلتے ہوئے پانی سے بھردیں اور پھر اسے پندرہ منٹ تک ڈھانپ کر رکھیں۔ پھر اسے پی لیں۔ یہ نسخہ اس کھانسی کے لیے بہترین ہے جس میں بلغم بن رہا ہو جبکہ خشک کھانسی کے لیے موزوں نہیں مانا جاتا ہے کہ بادام گلے کے مسائل بشمول کھانسی سے بچاﺅ کے لیے فائدہ مند ہے۔ اس کے لیے چند چائے کے چمچ اچھے طرح کٹے ہوئے باداموں کو مالٹے کے جوس میں شامل کریں اور چسک۔یاں لے کر پی لیں یہ کھانسی میں کمی لانے کے لیے قدرتی نسخہ ثابت ہوگاسانس کی تکلیف یا دائمی کھانسی میں مبتلا مریضوں کو سردیوں اور بہار کے موسم کے آغاز سے پہلے ہی بہت محتاط ہو جانا چاہیے کیونکہ پھیپھڑوں کی نالیوں میں جمع ہونے والی بلغم نزلے زکام کے ج۔راثیم۔وں کی آماجگ۔اہ بن جاتی ہے جہاں وہ تیزی سے نشو و نما پاتے ہیں۔یہ بلغم کبھی کبھی شدید کھانسی کی صورت میں بھی باہر نہیں نکلتی، نالیوں کو جکڑے رکھتی ہے اور اکثر پھیپھڑوں کے مہل۔ک انفیک۔شن کا سبب بنتی ہے۔ شدید کھانسی عموماً لگ بھگ تین ہفتے رہتی ہے۔ کھانسی کی چند دیگر اقسام ٹھیک ہونے میں کبھی کبھی کافی وقت لے لیتی ہیں تاہم کھانسی کسی بھی نوعیت کی ہو اس کا تعلق نظام تنفس میں پیدا ہونے والے کسی نقص سے ضرور ہوتا ہے۔ گلے کی خرابی، حلق کی سوزش، سانس کی نالی میں کسی قسم کے انفیک۔شن کا جن۔م لینا یا پھیپھڑوں کی خرابی، کھانسی کا سبب بنتی ہے۔ کھانسی کا مؤثرعلاج نہ ہونے کی صورت میں یہ خط۔رناک شکل اختیار کر سکتی ہے

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *