آج 18 رمضان کے دن صرف 33 مرتبہ یہ کلمات پڑھیں دل میں جو ہوگا سب ملے گا

وظیفہ کرنے کا طریقہ بتا دیتے ہیں۔ آپ نے اس عمل کو نماز تہجد کے وقت کرنا ہے ۔بہتر یہ ہے کہ آپ دورکعت نماز صلوۃ التوبہ کی پڑھ لیں ۔ دو رکعت نوافل آپ نے اس ترتیب سے پڑھنے ہیں ۔ کہ سورت فاتحہ کے بعد سا ت مرتبہ آپ نے سور ت اخلاص پڑھنی ہے۔ پھر رکو ع وسجو د چلے جانا ہے اور پھر اسی ترتیب سے دوسری

رکعت اد ا کرنی ہے۔ اور سلام پھیرنے کے بعد اسی جگہ پر بیٹھ جانا ہے۔ پوری توجہ یقین اور یکسوئی سے آپ نے اس عمل کو پڑھناہے یا درکھیں ! جب آپ نے وظیفہ کرنا ہے۔ آپ کا دھیان وظیفے کی طرف ہوناچاہیے۔ اور آپ کا مقصد آپ کے ذہن میں ہونا چاہیے آپ نے ان کلمات کو پڑھناہے۔ جو آپ کو بتائیں گے ۔ وہ کلمات ” ربنا ء امنا فاغفرلنا وارحمنا وانت خیر الرحمین ” ہیں۔ ان کلمات کو آپ نے ایک سو مرتبہ پڑھناہےا س کے اول وآخر گیارہ گیارہ مرتبہ درود پاک پڑھ کر اللہ کی بارگاہ میں خصوصی دعاکرنی ہے۔ یا درکھیں ! کہ جب آپ نے دعا کرنی ہے ۔ تو آپ نے سجدے کی حالت میں دعا کرنی ہے۔ یعنی آپ نے اپنے سر کو سجدے میں رکھناہے۔ اور اللہ سے آپ نے خصوصی دعا کرنی ہے۔ اپنے گن اہوں کی کثرت کو مد نظر رکھتے ہوئے آپ نے اللہ تعالیٰ سے گن اہوں کی معافی طلب کرنی ہے۔ مولا ! میں گن اہوں میں ڈوبا ہوا ہوں۔ پاؤں سے لے کر سر تک یا اللہ ! گن اہوں میں ڈوبا ہوا ہوں۔ تیری رحمت بھری ۔ اپنی رحمت کے صدقے

مجھے بخش دے ۔ جہن م کی آ گ سے بچا۔ جہن م کی گرمی سے بچا۔ حشر کی ش.رمندگی سے بچا اور مولا مجھے ہمیشہ اپنی رحمت کے سائے تلے رکھنا۔ مجھے ہمیشہ اپنی حفظ وایمان میں رکھنا۔ اور مجھے ہر وہ نیک کام کرنے کی توفیق عطافرماجس میں تو اور تیرا محبوب راضی ہو۔ مجھے صراط مستقیم کے رستے پر چلنے والا بنادے ۔ اور آقامصطفی ﷺ کی پیار ی پیار ی سنتوں پر عمل کرنے والا بنا دے ۔ اس طرح اپنے لفظوں میں اللہ سے معافی طلب کرنی ہے۔ اپنی مغفر ت مانگنی ہے۔ اپنی بخشش کروانی ہے۔ اللہ کی رحمت بڑی وسیع ہے اس کے خزانے میں کسی چیز کی کمی نہیں۔ آپ مانگ کر دیکھیں تو اللہ تعالیٰ آپ کو ضرور عطاکرے گا۔ آپ نے اس عمل کو نماز تہجد کے وقت کرنا ہے۔ اس کے علاوہ اٹھار ہ رمضان والے دن پورے دن میں کسی بھی وقت یا کسی بھی نماز کے بعد آپ نے ان کلمات کو 33 مرتبہ پڑھنا ہے۔ وہ کلمات ” یا بدیع السموت یا حی یا قیوم انی اسئلک” ہیں۔
ان کلمات کو پڑھنے کی فضیلت یہ ہے کہ حضرت انس رضی اللہ عنہ بیا ن کرتے ہیں۔ میں نبی کریم ﷺکے ساتھ تھا۔ کہ ایک آدمی نے دعا کی تو یہ کلمات کہ توآپﷺ نے فرمایا: کیا تمہیں معلو م ہے کہ اس نے کس چیز کے ساتھ دعا کی۔ اس ذات کی قسم جس کے ہاتھ میں میری جان ہے۔ اس نے اللہ کو اس کے نام سے پکارا ۔ جب اس نام سے پکار ا جاتا ہے تو وہ دعا ضرور وقبول فرماتاہے۔ یہ ہمارے آقاﷺ نے خود ارشادفرمایا ہے کہ : جو بندہ ان کلمات کو پڑھ کر اپنے رب کو یاد کرتا ہے جو بھی دعا مانگتا ہے۔ اللہ کریم اس دعاکو ضرور قبول فرماتاہے۔ اسے ہر وہ چیز نوازتا ہے ہر وہ نعمت سے نوازتا ہے جس کی اس کو ضرورت ہے طلب ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *