رمضان کے پہلے جمعہ یہ وظیفہ لازمی کر یں۔ اس سے زیادہ کوئی طاقت والا وظیفہ نہیں ہے۔

آج کا جو ہمارا وظیفہ ہے یہ جمعہ کے دن کے حوالے سے ہے یہ وظیفہ آپ نے جمعہ کے دن کر نا ہے۔ جمعہ کے دن جو شخص یہ دو لفظ پڑھے گا۔ اور جو بھی دعا منہ سے نکا لے گا اس کی وہ دعا پوری ہو گی چاہے اس کی کوئی بھی حاجت ہو۔ جو کہ صدیوں سے پوری نہ ہو رہی ہو۔ یا چاہے کوئی دعا ہو جو کہ پوری نہ

ہو رہی ہو تو اسے چاہیے کہ وہ جمعہ کے دن اس عمل کو کر ے تو انشاء اللہ اس کی ہر خواہش ہر دعا ضرور پوری ہو گی کیونکہ آج کا ہمارا وظیفہ جمعہ کے دن کے حوالے سے ہے اس لیے ہم پہلے جمعہ کے دن کی فضیلت کے بارے میں بات کر تے ہیں ۔ جمعہ عربی لفظ ہے جس کا مطلب ہے جمع ہونے کا دن اسی دن حضرت آدم ؑ کی اولاد جمع کی جا ئے گی یا اس وجہ سے کہ حضرت آدم ؑ حضرت حوا ؑ زمین پر اسی روز ملے تھے یا سلام میں جب اس کو مسلمانوں کے اجتماع کا دن قرار دیا گیا تو اس کو جمعہ کہا گیا حدیث شریف میں جمعہ کے کئی نام ذکر کیے گئے ہیں جیسا کہ دنوں کا سردار بہترین دن زیادہ فضیلت والا دن حاضرین کا دین نعمتوں کا زیادتی کا دن۔ مسلمانوں کی عید ۔ زمانہ جاہلیت میں اس دن کو یومِ عروبہ رحمت کا دن کہا جا تا تھا جمعہ دراصل ایک اسلامی اصلاح ہے یہودیوں کے ہاں ہفتے کا دن عبادت کے لیے مخصوص تھا۔ کیونکہ اسی دن خدا نے بنی اسرائیل کو فرعون کے ظلم سے نجات بخشی۔ عیسائیوں نے اپنے آپ کو یہودیوں سے علیحدہ کرنے کے لیے اتوار کا دن از خود مقرر کیا ۔ اگر چہ اس کا کوئی حکم نہ حضرت عیسی ؑ نے دیا تھا اور نہ انجیل میں اس کا کوئی ذکر ہے۔ اسلام میں ان دونوں ملتوں سے

اپنی ملت کو ممتاز کرنے کے لیے ان دونوں دنوں کو چھوڑ کر اجتماع عبادت کے لیے اختیار کیا اور اسی بنا پر جمعہ کو مسلمانوں کی عید کا دن کہتے ہیں حضور ﷺ نے اس کی فضیلت بیان کر تے ہو ئے فر ما یا کہ حضرت آدم ؑ اسی دن پیدا کیے گئے اور اسی دن میں جنت میں داخل کیے گئے اور اسی دن جنت سے نکالے گئے اور ق ی ا م ت اسی دن آ ئے گی جیسا کہ ہم نے بتا یا کہ جو بھی شخص جمعہ کے دن دولفظ پڑھ کر اور جو بھی دعا منہ سے نکالے گا اس کی وہ دعا پوری ہو گی چاہے اس کی کوئی بھی خواہش ہو جو کہ صدیوں سے پوری نہ ہو رہی ہو چاہے کوئی دعا ہو پوری نہ ہو رہی ہو تو اسے چاہیے کہ جمعہ کے دن سب سے پہلے غسل کر ے اور کثرت سے درود شریف پڑھے۔ اور پھرآ پ نے نمازِ جمعہ ادا کرنی ہے اور نمازِ جمعہ ادا کرنے کے بعد پھر آپ نے یہ عمل کرنا ہے اس عمل کے کر نے کا طریقہ کچھ اس طرح سے ہے ۔ کہ آپ نے جمعہ کی نماز ادا کرنے کے بعد دو نفل پڑھ لینے ہیں اور وہیں پر آپ نے جائے نماز پر بیٹھ کر سب سے پہلے اکیس بار درود شریف پڑھ لینا ہے اور پھر یا حییُ یا قیوم کو دو سو بار پڑھنا ہے اور پھر آخر میں اکیس بار درودِ شریف پڑھنا ہے اور اس وظیفے کو کر تے ہو ئے آپ نے اس چیز پریقین رکھنا ہے اور اس کو پوری توجہ سے کر نا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *