پتہ کی پتھری ختم کرنے کا سوفیصد نبوی علاج

آج ہم پتے کی پتھری کے حوالے سے بتائیں گے یہ کیوں پیدا ہوتی ہے اس کی کیا وجوہات قرآن میں اس کا کیا علاج اور طب نبوی میں اس کا کیا علاج بتایا گیا ہے ۔ آج ایسا وظیفہ بھی بتائیں گے جس کے ذریعے سے اس کا علاج کیا جاسکتا ہے ۔ پتہ ناشپتی کی طرح کا7.5سینٹی میٹر سے 12سینٹی میٹر لمبا ایک تھیلی نما جزو

بدن ہے ۔ جو جگر کے اندرونی حصہ کے ساتھ جڑا ہوتا ہے ۔پتہ کا کام بائل یا سفرا کا جمع کرنا ہوتا جو چکنائی وغیرہ کا ہضم ہونے میں مدد کرتا ہے ۔ سفرا میں 90فیصد پانی ایک سے دوفیصد نمکیات باقی چربی ہوتی ہے ۔ بائل پتہ میں جمع ہونے کے ساتھ ساتھ اس میں پانی وغیرہ بھی خارج کرتا ہے جب اس میں پانی اور دوسرے اجزاء خارج ہوجائیں تو پھر یہی بائل پہلے ریت میں بدلتا ہے جمع ہوکر پتھری کی شکل اختیار کرلیتے ہیں پتے کی پتھری کولیسٹرول کی بھی ہوسکتی ہے اس کے علاوہ زیادہ تر پتھریاں کولیسٹرول کیلشیم کاربونیٹ اور پروٹین وغیرہ پر بھی مشتمل ہوتی ہیں۔ پتہ کی بعض پتھر کیلشیم پر بھی مشتمل ہوتے ہیں۔ زیادہ تر چھوٹے سیاہ رنگ کے اور تعداد میں کافی زیادہ ہوتے ہیں۔ پتہ پتھری سے زیادہ تر چالیس سال سے زیادہ عمر کی صحت مند موٹی سفید رنگ اور زیادہ بچوں والی عورتیں متاثر ہوتی ہیں لیکنک مردوں میں یہ بیماری عام پائی جاتی ہے ۔ جب پتھر پتہ میں جمع ہوجائیں تو یہ جمع ہوکر اس کے ساتھ نالی بائل میں پھنس جاتے ہیں جس سے پیٹ کے اوپر دائیں طرف درد محسوس ہوتا ہے اور جی متلاتا ہے درد میں اضافہ ہوتا چلا جاتا ہے ۔ بعد میں بہت شدید ہوجاتا ہے ۔اب بتاتے ہیں کہ قرآن سے اس کا علاج کیسے ممکن ہے اور طب نبوی میں اس کا علاج کسطرح سے کیا جاتا ہے ۔ اس وظیفہ بھی بتاتے ہیں آپ نے سورۃ الم نشرح 101مرتبہ تلاوت کریں اور پانی پر دم کریں اورپئیں اس سے ضرور آفاقہ ہوگا۔ اس کے علاوہ طب نبوی سے علاج کیلئے ایک چائے کا چمچ زیتون کا تیل صبح اور ایک چائے کا چمچ زیتون

کا تیل شام کو لگاتار پینا شروع کریں اور 11دن تک استعمال کریں اس کے بعد ایک ٹیبل سپون زیتون کا تیل اور ایک ٹیبل سپون اسپغول کا چھلکا لیں اور روزانہ صبح خالی پیٹ 3ہفتہ تک استعمال کریں اور پھر الٹراساؤنڈ کروائیں پتہ کی پتھری ختم ہوجائیگی ۔ اگر آپ کلونجی اور جو کا اگر آپ استعمال کرتے ہیں یہ پتہ کی پتھری کو اور جگر کو صحت مند بناتا ہے ۔ یہ پتہ کی پتھری کو بننے سے روکتا ہے پتھری ختم ہوجائے تو آپ کا کولیسٹرول لیول بھی درست ہوجاتا ہے سانس پھولنے کی شکایت بھی دور ہونے لگتی ہے ۔ امام نسائی ؒ نے بیان کیا ہے کہ دو شخص عراق سے کسی کے یورن کی بندش کی شکایت لیکر آئے لوگوں نے حضرت ابو درداء ؓ کے بارے میں بتایا تو حضرت ابو درداء ؓ نے فرمایا کہ میں نے رسول اللہﷺ سے سنا ہے کہ جسے پتھری کی شکایت ہو وہ یہ دعا پڑھے ۔رَبُّنَا الَّذِی فِی السَّمَآئِ تَقَدَّسَ اسمُکَ اَمرُکَ فِی السَّمَآئِ وَالاَرضِ کَمَا رَحمَتُکَ فِی السَّمَائِ فَاجعَل رَحمَتَکَ فِی الاَرضِ وَاغفِرلَناَ ذُنُوبَنَا وَخَطَایَانَا اَنتَ رَبُّ الطَّیِبِّینَ فَاَنزِل شِفَائً مِّن شِفَائِکَ وَ رَحمَةً مِِّن رَحمَتِکَ عَلٰی ہٰذَا الوَجعِ ۔اس وظیفہ کو روزانہ 21بار کسی بھی نماز کے بعد پڑھ سکتے ہیں وظیفہ کے شروع اور آخر میں درود شریف پڑھ لیا کریں۔مریض یہ وظیفہ خود کرسکتا ہے اگر مریض نہ کرسکے تو گھر کا کوئی فرد یہ وظیفہ کرلے اور یہ دعا پڑھ کر مریض دم کرے او رپانی پر دم کرکے مریض کو پلائے اللہ تعالیٰ شفاء عطافرمائیں گے ۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *