یہ پانچ سورتیں کوئی اس طرح سے پڑھ لے خاص کر شوگر ، بواسیر جیسی بیماریوں سے چھ۔ٹکارا

آج ہم آپ کو کچھ سورتوں کے خواص بتانے جارہے ہیں ۔یہ اعمال اور سورتیں صحت وتندرستی کے حوالے سے نہایت اکسیر کا درجہ رکھتی ہیں۔ نمبر ایک سورۃ السجدہ اس کا عمل کیا ہے یہ سورت شفاء یابی کے اثرات رکھتی ہے اسی لیے اس سورت کو تین مرتبہ پڑھ کر پانی پر دم کرکے مریض کو پلانا۔ مریض کی صحت یابی

کی دلیل ہے اور اللہ تعالیٰ اپنی رحمت سے مریض کے صحت یاب ہونے کا ذریعہ بنا دیگا ۔ دوسری سورت سورۃ یٰسین ہے عمل کیا ہے کہ اگر کوئی شخص اس سورت کو بعد نماز فجر ایک مرتبہ روزانہ پڑھنے کا معمول بنا لے تو اسے ہر بیماری سے شفاء ملے گی ۔لیکن اس میں یقین رکھنا ضروری شامل ہے ۔پھر سورۃ الحشر کا عمل ہے اس کی آخری تین آیتیں اسم اعظم شمار ہوتی ہیں ۔ جن میں مرض کی شفاء اور ضرورت کے پورا ہونے کے اثرات بہت تیز ہیں ۔ اسلیے یہ آیات جس مریض کیلئے پڑھی جائینگی ۔ اللہ تعالیٰ کے فضل سے شفاء حاصل ہوگی ۔ ایک اور سورت سورۃ الفیل ہے جو شخص بعد نماز عشاء 313مرتبہ 40روز تک لگاتار پڑھتا رہے ۔ انشاء اللہ اسے بلڈ پریشر شوگر جیسی بیماریوں سے چھٹکارہ مل جائیگا ۔آخری سورت سورۃ القریش ہے یہ سورت بیماریوں سے نجات کیلئے مفید مانی جاتی ہے خاص طور پر موذی بیماریاں جیسا کہ شوگر ہوگئی فالج ہے بواسیر کیلئے ان بیماریوں سے بچنے کیلئے آپ بعد نماز عشاء 111مرتبہ اس کو پڑھنے کا معمول بنا لیں انشاء اللہ جتنی بھی بیماریاں ہونگی یہ آہستہ ٹھیک ہونا شروع ہوجائینگی ۔ حضرت جنید بغدادی ؒ کی خدمت میں کسی شخص نے تحفہ میں کوئی پرندہ بھیجا جس کو انھوں نے قبول فرما لیا اور ایک مدت تک اپنے پاس رکھ کر اس پرندے کو رہا کر دیا یہ دیکھ کر لوگوں نے آپ سے اس کا سبب دریافت کیا تو ارشاد فرمایا کہ اس پرندہ نے

مجھ سے فریاد کی کہ جنید افسوس ہے کہ آپ تو اپنے احباب کی مناجات سے لطف اندوز ہوتے رہیں اور میں بے مونس و غم خوارِ آپ کے اس پنجرے میں مقید رہوں میں نے اس کی یہ درد بھری فریاد سن کر اس کو آزاد کر دیا اور وہ پرندہ جاتے وقت یہ کہ کر اڑ گیا کہ جب تک کوئی پرندہ ذکر الٰہی میں مصروف رہتا ہے وہ جال کے پھندے سے آزاد رہتا ہے اور جہاں ذکر الٰہی سے غفلت ہوئی کسی نہ کسی جال کے پھندے میں پھنس جاتے ہیں میں تو صرف ایک ہی مرتبہ ذکر سے غافل ہوا تھا کہ مجھے اس کی س زا میں پنجرے کی قید میں مقید ہونا پڑا ہائے افسوس ان لوگوں کا کیا حال ہوگا جو اکثر بیشتر یاد الٰہی سے غافل رہتے ہیں حضرت جنید میں آپ سے مستحکم وعدہ کرتا ہوں کہ اب کبھی ایسا نہیں کروں گا اس کے کبھی کبھی وہ پرندہ حضرت جنید رحمہ اللہ کی زیارت کے لئے آتا اور دسترخوان پر ان کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھایا کرتا تھا چنانچہ جب حضرت جنید ؒ کا انتقال ہوا تو تو وہ پرندہ بھی تڑپ کر زمین پر گر گیا اور اس کی روح پرواز کر گئی یہ عجیب واقعہ دیکھ کر لوگوں نے اس پرندہ کو بھی حضرت جنید بغدادی ؒ کے ساتھ ہی دفن کر دیا اور مدت کے بعد حضرت جنید بغدادی ؒ کے مریدوں میں سے کسی نے ان کو خواب میں دیکھ کر دریافت کیا کہ حضرت آپ کے ساتھ کیا معاملہ کیا گیا تو حضرت نے جواب دیا کہ اس پرندے پر رحم کرنے کی وجہ سے اللّٰہ تعالیٰ نے مجھ پر بھی رحم فرما دیا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *