رمضان کا دوسرا عشرہ شروع ہو گیا۔ دس بار آیت الکرسی کا عمل۔

رمضان کا پہلا جو عشرہ ہے وہ اختتام پذیر ہو ا دوسرا عشرہ جو ہے وہ شروع ہو ا اے مالک ِ کریم جن کے والدین اس دنیا سے رخصت ہو گئے چلے گئے یا اللہ ان کے والدین کی بخشش فرما اور جن کے والدین زندہ ہیں انہیں رزق مال جان کے اندر زندگی کے اندر خیر و بر کت کا نزول فر ما میری وہ اسلامی ما ئیں

بہنیں بیٹیاں جو گھروں میں ہیں یا اللہ حضور کی آل اولاد کا صدقہ ان کے گھروں پر رحم و کرم فر ما ان کی اولادوں کو ان کے بھائیوں کو ان کے والدین کو ایسی عظمتوں سے ایسی عزتوں سے نواز جو کبھی ختم ہونے میں نہ آ ئیں آج آپ کے لیے جو وظیفہ لے کر حاضر ہو ئے ہیں۔ یہ دوسرے عشرے کے اندر آیت الکرسی کا پڑھنے کا ایک خاص عمل ہے بہترین عمل جو ہے وہ آپ کی خدمت میں حاضر ہے یقین جانیے کہ اللہ کے فضل و کرم سے آپ حیران رہ جا ئیں گے کہ اس عمل کا کتنا زیادہ گھرپر اثر پڑے گا اور کتنا اللہ کے فضل و کرم سے آپ کے مال رزق اولاد کے اوپر اس کا جو ہے اثر پڑے گا۔ تو دس دن ہو تے ہیں عشرے کے اندر یعنی کہ عشرہ دس کو بھی کہتے ہیں عشرہ دس کو ہی کہتے ہیں تو آیت الکرسی اس حوالے سے جس گھر میں پڑھی جا ئے گی وہاں اللہ کر یم کا بہت زیادہ کرم ہو تا ہے۔ پڑھنےکا جو طریقہ کار ہے

وہ بھی میں انشاء اللہ آپ کو بتانے جا رہا ہوں اور کس ٹائم پڑھنی ہے وہ بھی طریقہ آپ کو بتانے جا رہا ہوں انشاء اللہ آپ حیران رہ جا ئیں گے کہ مالکِ کریم کیسے کرم فر ما تا ہے اور یاد رکھیں کہ یہ آیت الکرسی میں اسمِ اعظم الحیی قیوم ہے پچاس کلمے ہیں اور ہر کلمے میں پچاس بر کتیں ہیں اس کے پڑھنے سے رنج و غم دور ہو جا تا ہے روزی میں کشادگی ہو تی ہے اور گھر کے اندر جو بھی مقاصد ہو ں ان مقاصد میں کا میابی ہو تی ہے شی طان گھر سے نکل جا تا ہے بندہ ہر آفت سے محفوظ رہتا ہے اور اللہ کریم کےکرم سے اس گھر کے اردگرد ایک گھیرہ باندھ دیا جا تا ہے۔ کوئی چ و ر ڈا ک و شی طانی قوت بے بر کتی اور جو نحوست ہے وہ اس گھر میں داخل نہیں ہو گی ٹھیک ہے؟ یہ ایسی آیت ہے۔ سحری کے ٹائم اُٹھیں۔ اور اس آیت کو کر یں۔ تا کہ اس کا فائدہ ہمیں پہنچ سکے۔ جیسا کہ ہم سب ہی اس بات سے بہت ہی اچھے سے واقف ہیں کہ آیت الکرسی پڑھنے کے بہت ہی زیادہ فوائد ہیں تو ہمیں چاہیے اس عشرے کے اندر اس کے پڑھنے کا معمول بنا ئیں تا کہ ہمیں مختلف قسم کی ڈھیروں برا کات نصیب ہو سکیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *