اب آپ غریب نہیں رہو گے ایک انڈے کا صدقہ کردو

آپ نے سنا ہو گا کہ ہم لوگ آپس میں جب بیٹھتے ہیں سارے دوست یار رشتہ دار تو اکثر یہ بات ہوتی ہے کہ یار یہ غریب بندہ ہے اس کی لاٹری نہیں نکلتی اس کا پرائز بانڈ نہیں نکلتا غریب ہے تو یہ غریب ہی ہوتا جارہا ہے اوروہ دیکھو فلاں کتنا امیر ہے اور امیر ہو رہا ہے یہ کیا ہے جو امیر لوگ ہوتے ہیں یہ کہیں نہ کہیں صدقہ

خیرات چیریٹی کرتے رہتے ہیں یہ آپ مانے گے بات ہوسکتا ہے کہ کوئی امیروں میں دو چار فیصد بخیل ہو ں گے کنجوس ہوں گے لیکن امیر لوگ زیادہ تر خدمت خلق کرتے ہی رہتے ہیں کہیں چندہ دے دیا کہیں مسجد میں دے دیا یہ بڑے بڑے گورے ہیں کتنی کتنی جا کر ڈونیشن اور چیریٹیز کرتے ہیں یتیم خانوں میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں جو میرے نام پر آپ دیتے ہو تو دس گنا آپ کو اس سے بڑھ کر دنیا میں دیتا ہے اور ستر گنا انشاء اللہ آخرت میں دے گا یہ انڈے کا صدقہ کیا ہے ؟ یہ کیوں ہے ؟ یہ ان لوگوں کے لئے ہے جو بیچارے نہیں کرسکتے خیرات چندے نہیں دے سکتے چیریٹیز نہیں کر سکتے اب انڈہ کتنے کا ہے دس بارہ پندرہ اٹھارہ بیس روپے کا ہو گا انڈے کا صدقہ بہت ہی اہمیت کا حامل ہے دنیا اس بات کو جانتی ہے جنہوں نے یہ عمل آزمایا ہے انڈے کے صدقے کے بارے میں جس جس نے یہ عمل کیا ہے وہ کئی تو ایسے ہیں کہ کل تک یعنی کہ کچھ وقت گئے وقت تک ان کے حالات ایسے تھے کہ ہوسکتا ہے کہ کسی وقت ان کو کھانا بھی نہ ملے لیکن ایک وقت آیا کہ وہ کروڑوں کے مالک بن گئے تو انڈے کا صدقہ دینے کےبارے میں عمل بتایا جارہا ہے ۔اگر آپ بڑی مشکل میں ہیں غریبی میں ہیں پریشانی میں ہیں زیادہ بڑا

صدقہ بھی نہیں آپ کر سکتے تو آپ اس طرح کیا کیجئے کہ ایک انڈہ لے لیجئے اب اس میں کوئی فرق نہیں ہے کہ آپ دیسی لیتے ہیں یا فارمی لیتے ہیں انڈہ انڈہ ہی ہے مرغی سے آتا ہے چاہے وہ دیسی ہو یا فارمی ہو اس سے کوئی غرض نہیں ہے ایک انڈہ لے لیجئے اور وہ انڈہ آپ اپنے سر پر سات بار وار کر یہ وقت ہو جب مغرب کی اذانیں شروع ہوجائیں انڈے کو اپنے سر پر سے سات چکر دے کر اس کے بعد نماز مغرب ادا کریں اور پھر اسے جاکر کسی قبرستان میں جہاں کیڑے مکوڑوں کی آماجگاہ ہو وہاں پر جائیں اور یہ انڈہ رکھ کر آجائیں اور یہ دھیان رکھئے گا کہ وہ جگہ ایسی ہونی چاہئے جوکہ آپ دن میں آکر دیکھ آئیں کہ جہاں پر دھوپ بھی زیادہ نہ پڑتی ہو لیکن اگر جگہ نہیں مل رہی تو پھر رکھ بھی دیں تو کچھ نہیں آپ دیکھیں گے کہ کچھ دن گزریں گے جب انڈہ اندر سے سکڑنا شروع ہوجاتا ہے اور پھر وہ ٹوٹ جاتا ہے اس میں ظاہر ہے جس میں درجنوں اللہ کی مخلوقات ہیں اس میں جائیں گے وہ کھائیں گے یہ آپ کا صدقہ ہے اور جیسے ہی وہ انڈہ ٹوٹے گا اسی دن ٹوٹ جائے اگلے دن ٹوٹ جائے جب بھی ٹوٹے خود بخود ٹوٹے ایسی جگہ نہ رکھیں کہ پاؤں کے نیچے آجائیں وہاں سے کیڑے مکوڑے کھانا شروع ہوں گے تو آپ کا صدقہ شروع ہوجائے گا اس کے بعد انشاء اللہ تعالیٰ میرے رب کی رضا ہوئی تو آپ کے دن پھرنا شروع ہوجائیں گے یہ عمل آپ ہفتے میں دو دفعہ کر لیں تو بہت ہی فائدہ ہوگا۔اللہ ہم سب کاحامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.