پھوڑے پھنسی پرانی خارش چنبل کا یقینی علاج

خارش ایک ایسی مصیبت ہے جس کے سامنے مزاحمت بہت مشکل کا م ہے۔ اور کوئی چیز یا دوائی ماسوائے کھجانے کے اس سے فوری نجات دلا کر سکون فراہم نہیں کر سکتی لیکن یہ آ رام دیر پا نہیں ہو تا بلکہ خارش بڑ ھنے کے باعث زیادہ کھجانے سے مزید جلدی مسائل پیدا ہو نے شروع ہو جاتے ہیں۔۔ آج ہم گند ی

سے گندی خارش چنبل ، پھوڑے اور پھنسیوں کے لیے ایک نہا یت ہی مجرب نسخہ آپ لوگوں کے لیے لا ئے ہیں جسے صرف چند روز استعمال کر نے سے پھوڑ ے پھنسی ، خارش الرجی وغیرہ کا جڑ سے مکمل خاتمہ ہو جائے گا۔ اس مرہم کو بنانے کا طر یقہ اس طرح سے ہے۔ گند ھک آ ملہ سار دو تو لا لینا ہے اور اس کے علاوہ مشک کا فور تین ماشہ لینا ہے اور ا س سب کے ساتھ ساتھ آپ نے لینا ہے ست الا ئچی تین ما شہ ست اجوائن تین ماشہ اور اس کے علاوہ ست پو دینہ تین ماشہ اور اس کے علاوہ و یز لین دو سو پچاس گرام ، بو رک ایک تو لہ ، زنک آکسائیڈ ایک تولہ، ڈیٹول دو سو پچا س گرام ، تیل تارامیر ا دو تو لہ ۔اب اس کی تیاری کا طریقہ کار ملاحظہ فر ما لیجئے: گند ھک کو باریک پاؤڈر کر کہ تمام چیزیں ملا لیں مر ہم سی بن جائے گی۔ اب اس مرہم کو کسی صاف جار میں محفوظ کر کے رکھ لیں۔ اور اب اس سب کے بعد اس کا طریقہ استعمال کا جائزہ فرما لیجئے۔ طریقہ استعمال: متاثرہ جگہ پر صبح او ر رات سوتے وقت

لگا ئیں ۔ انشاء اللہ چند مرتبہ کے استعمال سے پرانی سے پرانی خارش چنبل پھوڑے پھنسیاں جڑ سے ختم ہو جائیں گے اور اگر آپ نے بھی چنبل خارش یا پھوڑوں پھنسیوں سے پریشان ہیں۔ طرح طرح کے ٹوٹکے دوائیں استعمال کر کے تھک گئے ہیں تو اس نسخے کو ایک ضرور ٹرائی کر یں۔ انشاء اللہ ما یوسی نہیں ہو گی۔ ہم صرف نسخہ دیتے ہیں شفاء تو اس ذات ِ مبارکہ کے ہاتھ میں ہے جو خاک کو بھی سو نا بنا دے ۔ یہاں میں ایک بات کر نا چاہتا ہوں کہ صرف ایک ہی ذات ہے جو سب کو بیماریاں بھی دیتی ہے اور سب کو شفاء بھی دیتی ہے تو اس نے انسان کو مختلف قسم کی بیماریوں سے بچنے کے لیے بہت سی جڑ ی بو ٹیاں بھی بنا ئی ہیں جن کے استعمال سے بہت سی بیماریوں سے بچا جا سکتا ہے اور اس سب کے ساتھ ساتھ اپنی صحت کو بھی بر قرار رکھ جا سکتا ہے۔ مندرجہ بالا بیماریوں سے بچنے کے لیے آ پ کو کر نا صرف ایک کام ہو گا کہ میرے بتائے ہوئے طریقوں پر عمل کر کے داغ دھبوں اور دانوں سے اور پھنسیو ں سے بچا جا سکتا ہے اور اس سنگین مسئلے سے آرام حاصل کیا جا سکتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *