ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی قسمت کا فیصلہ ، ٹرمپ جاتے جاتے کیا کر گئے؟ جانیے

سینئر صحافی حامد میر کا کہنا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے اقتدار کا سورج غروب ہو چکا ہے، ٹرمپ نے جاتے جاتے ایک اسرائیلی جاسوس کی سزا معاف کر دی ہے ، جسکی سزا معاف کی گئی وہ سنگین جرائم میں ملوث تھا، وہ ایک لمبے عرصے سے امریکی جیل میں قید تھا لیکن ٹرمپ کی جانب سے سزا معاف کیے جانے کے

بعد اسے اسرائیل کے حوالے کر دیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے امریکی صدر نے اسرائیلی جاسوس کی سزا تو معاف کر دی لیکن انہوں نے امریکی جیل میں قید پاکستانی خاتون ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی سزا معاف نہیں کی، حامد میر کا کا کہنا تھا کہ میرے پروگرام میں آکر عمران خان اکثر کہا کرتے تھے کہ جب وہ اقتدار میں آگئے تو امریکہ سے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی سزا کی معافی کی بات کریں گے۔ حامد میر کا کہنا تھا کہ عمران خان ابھی تک اپنے اس دعوے پر پورے نہیں اتر سکے لیکن اب امریکہ کی انتظامیہ تبدیل ہوچکی ہے اور عمران خان کے ہاتھ یوں نادر موقع لگ چکا ہے اگر وہ چاہیں تو ایک مرتبہ پھر امریکہ کے سامنے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کا معاملہ اُٹھا کر انہیں پاکستان واپس لایا جاسکتا ہے اور وہ ایسا کر سکتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.