پنجاب بھر میں سستی بجلی! عثمان بُزدار نے اہلیان پنجاب کو سرپرائز دے دیا، سابقہ حکومتیں بھی پیچھے رہ گئیں

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) بزدار حکومت سستی بجلی فراہم کرنے کیلئے سرگرم،پنجاب تھرمل پاور لمیٹڈ او ر بینکوں کے کنسورشیم کے درمیان 100ارب کی فنانسنگ کا معاہدہ کر لیا ، اس منصوبے سے سالانہ 10ارب سے زائد یونٹ بجلی حاصل ہو گی۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کی قیادت میں پنجاب حکومت سستی بجلی فراہم کرنے کے لئے سرگرم -پنجاب تھرمل پاور پرائیویٹ لمیٹڈ او ر6

بینکوں کے کنسورشیم کے درمیان 100ارب روپے کی فنانسنگ کا معاہدہ آج ہوگیا ۔ وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار مقامی ہوٹل میں معاہدے کے سلسلے میں منعقدہ تقریب کے مہمان خصوصی تھے، معاہدے کے تحت بینکوں کا کنسورشیم 100ارب روپے کی فنانسنگ فراہم کرے گااور1263میگا واٹ کے پنجاب تھرمل پاور پلانٹ سے سالانہ10ارب یونٹس پیدا ہوں گے۔ وزیراعلی عثمان بزدار نے فنانسنگ کے لئے ہونے والے معاہدے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 6بینکوں کے کنسورشیم سے 100ارب روپے کی فنانسنگ کا معاہدہ قابل تحسین ہے اوراسے ملکی تاریخ کی سب سے بڑیSovereign گارنٹی کہا جا سکتا ہے۔ صوبائی وزیر خزانہ ہاشم جواں بخت، صوبائی وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک،چیئرمین منصوبہ بندی وترقیات،سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری توانائی اور ا ن کی ٹیم کو مبارکباد دتیا ہوں۔ انہوں نے کہاکہ کورونا وائرس کی وجہ سے کاروباری اور صنعتی سرگرمیوں میں تعطل کے باوجود PPA اور GSA جیسے موثر معاہدے کئے گئے ہیں۔ اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے پنجاب تھرمل پاور پلانٹ تیزی سے تکمیل کی جانب گامزن ہے اور اگلے سال کے آخر تک مکمل ہونے والے 1263میگاواٹ کے اس پراجیکٹ سے سالانہ 10ارب سے زائد یونٹ بجلی حاصل کی جاسکے گی۔ تریموں میں آر ایل این جی سے چلنے والا پنجاب پاور پلانٹ 80فیصد مکمل ہوچکاہے۔ 93کلومیٹر طویل گیس پائپ لائن اور 48کلومیٹر طویل ٹرانسمشن لائن کے پراجیکٹ مکمل ہو چکے ہیں۔ پنجاب پاور پلانٹ میں معروف بین الاقوامی کمپنی سیمنز سے مصدقہ جدیدترین ٹیکنالوجی پر مشتمل سسٹم نصب کیا گیا ہے۔ ہائی ایفیشینسی کی وجہ سے یہاں بجلی کی پیداواری لاگت انتہائی کم ہو گی اورگھروں اور صنعتوں کو سستی بجلی فراہم کی جا سکے گی۔ روپے میں ادائیگی کی وجہ سے زرمبادلہ کے ضیاع کو بچایا جا سکے گا اور اس سے بجلی کی پیداواری لاگت میں کمی ہو گی۔ گردشی قرضے کے بوجھ میں نمایاں کمی ہو گی اور اس پراجیکٹ کی بدولت ہزاروں لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع بھی میسر ہوں گے۔ سولر، ونڈپاور اور ہائیڈروپاور پلانٹ کے ذریعے حاصل کی جانے والی بجلی کی لاگت نسبتاً کم ہوتی ہے اورپنجاب میں توانائی کے متبادل ذرائع سے بجلی پیدا کرنے پر بھرپور توجہ دی جا رہی ہے۔ وزیراعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق عوام کو کم لاگت بجلی پیدا کر کے سستے داموں فراہم کرنے کے لئے پر عزم ہیں۔ گزشتہ ادوار میں لگائے جانے والے پاور پلانٹس سے 9.29سے 27.12 روپے فی یونٹ تک بجلی پیدا کی جاتی رہی جبکہ پنجاب تھرمل پاور پلانٹ کے ذریعے 8.95 روپے فی یونٹ کی شرح سے بجلی پیدا کی جا سکے گ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.