کون کہتا ہے کپتان کو فکر نہیں۔۔!! وزیراعظم عمران خان کی کوششوں کے ثمرات۔۔۔ مہنگائی میں نمایاں کمی، عوام نے سکھ کا سانس لے لیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) مارچ میں مہنگائی میں کمی کا سلسلہ برقرار ہے، مارچ کے پہلے ہفتے میں افراط زر کی شرح میں 0.32 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی، ماہرین کا کہنا ہے مہنگائی میں کمی کا سلسلہ جاری رہے گا۔ تفصیلات کے مطابق ادارہ شماریات کی جانب سے مارچ کے دوران مہنگائی سے متعلق اعداد وشمار جاری کر دیے گئے،

جس میں بتایا گیا مارچ کے پہلے ہفتے کے دوران مہنگائی کی شرح میں 0.32 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی جبکہ کم آمدنی والوں کیلئے قیمتوں کے حساس اشارئے میں 0.28 فیصد کی کمی ہوئی۔ اعداد وشمار کے مطابق آلو، پیاز، انڈے، چینی، گڑ، کیلے، اری چاول، گائے کے گوشت ، بکرے کے گوشت ، تازہ دودھ، دھی، صابن، ویجی ٹیبل گھی سمیت 18 اشیائے کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔ ادارہ شماریات کا کہنا تھا کہ ٹماٹر، پیٹرول، ہائی اسپیڈڈیزل، مٹی کا تیل، ایل پی جی ، چنے کی دال، دال مسو، لر، مسٹر ڈآئل، مرغی، لہسن اور آٹا سمیت 12 اشیا کی قیمتوں میں کمی ہوئی۔ اعداد وشمار کے مطابق باسمتی چاول، گندم، خوردنی تیل، ملک پاؤڈر ، روٹی سادہ، چائے، سرخ مرچ، سگریٹ، نمک کے نرخ برقرار رہے جبکہ گیس نرخ، بجلی کے نرخ ، بلب سمیت21 اشیا کی قیمتیں مستحکم رہیں۔ یاد رہے گزشتہ ماہ کے اختتام پر افراط زر کی شرح میں دو اعشاریہ دو فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی تھی، فروری میں مہنگائی میں اضافے کی شرح بارہ اعشاریہ چار فیصد ریکارڈ کی گئی۔ معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ حکومتی اقدامات اور عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت میں کمی کے باعث رواں ماہ کے اختتام تک افراط زر میں مزید کمی متوقع ہے۔ ادارہ شماریات کا کہنا تھا کہ جولائی تا فروری مہنگائی کی شرح سال گزشتہ کی نسبت11.70فیصد رہی، سبزیوں کی قیمتوں میں 13، کوکنگ آئل میں 10، چینی کی 8فیصد ، پھل 4 اور دالیں 2 فیصد تک مہنگی ہوئی جبکہ ایک ماہ میں ٹماٹر 60 ، انڈے 26،سبزیاں 11 اور آٹا 5 فیصد سستا ہوا جبکہ ایک ماہ میں ایل پی جی اور بجلی 13فیصد سستی اور گیس چارجز 55 فیصد بڑھے۔ مہنگائی میں کمی کےلیےوزیراعظم عمران خان کی جانب سے کئے گئے

اقدامات کےمثبت نتائج نمایاں ہونے لگے ، افراط زرکی حالیہ اعداد و شمار پر مبنی رپورٹ وزیراعظم کو پیش کردی گئی۔ رپورٹ میں بتایا گیا فروری میں افراط زرکی شرح کم ہوکر12اعشاریہ4فیصدپرآ گئی جبکہ جنوری میں افراط زرکی شرح 14اعشاریہ6فیصد تک پہنچ چکی تھی۔ اعدادوشمار کے مطابق شہری علاقوں میں مہنگائی13.4فیصدسےکم ہوکر11.2فیصداور دیہی علاقوں میں مہنگائی کی شرح 14.2فیصدتک آگئی۔ رپورٹ میں کہا گیا اشیائےخورونوش میں افراط زرکی شرح 19.5 سےکم ہوکر15.2فیصد ہوگئی ، مہنگائی میں کمی کےلیےمزید اقدامات جاری ہے ،آئندہ ماہ مزیدکمی متوقع ہے۔ وزیراعظم نے معاشی ٹیم کومہنگائی میں ہرممکن حدتک مزیدکمی لانےکی ہدایت کردی ہے۔ دوسری جانب ادارہ شماریات کی جانب سے فروری کےدوران مہنگائی سےمتعلق اعدادوشمار جاری کئے گئے ، جس میں بتایا گیا فروری 2020کے دوران مہنگائی کی شرح میں 1.04 فیصد کمی ہوئی ، مہنگائی کی شرح فروری 2019کےمقابلے میں 12.40 فیصدرہی۔ ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ جولائی تافروری مہنگائی کی شرح سال گزشتہ کی نسبت11.70فیصدرہی، سبزیوں کی قیمتوں میں 13، کوکنگ آئل میں 10، چینی کی 8فیصد ، پھل 4 اور دالیں 2 فیصد تک مہنگی ہوئی ۔ اعدادوشمار کے مطابق ایک ماہ میں ٹماٹر 60 ، انڈے 26،سبزیاں 11 اور آٹا 5 فیصد سستا ہوا جبکہ ایک ماہ میں ایل پی جی اور بجلی 13فیصدسستی اورگیس چارجز 55 فیصدبڑھے۔ ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ ایک سال میں پیاز 102 ، دال مونگ 84، آلو 83، سبزیاں 62 فیصد ، ماش 51، مکھن 43، چینی 37، گھی 34، دال چنا 24 اور دال مسور 22 فیصد مہنگی ہوئی جبکہ ایک سال میں ٹماٹر 61، انڈے 10 اور بجلی کے نرخ 4 فیصد سستے ہوئے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.