پاکستان میں سونے کے ذخائر میں کتنے فیصد اضافہ ہوگیا؟ جانیئے

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) پاکستان میں سونے کے ذخائرمیں مالی سال 2018-19ء کے دوران 20 فیصد اضافہ ہواہے۔ یہ بات ایشیائی ترقیاتی بینک کی رپورٹ میں کہی گئی ہے۔ ’’2020ء میں ایشیاوبحرلکاہل کے خطہ کے اہم اشاریے‘‘ کے عنوان سے جاری رپورٹ میں کہاگیاہے کہ مالی سال 2018-19ء میں پاکستان میں سونے کے ذخائرمیں 20 فیصد اضافہ ہوا، 2018-19ء میں پاکستان

کے پاس سونے کے ذخائرکا حجم 3.04 ارب ڈالرمالیتی تھاجبکہ مالی سال 2017-18ء میں پاکستان کے پاس سونے ذخائرکاحجم 2.534 ارب ڈالر مالیتی ریکارڈکیاگیاتھا۔اس رپورٹ میں سال 2000ء سے لیکر2019ء تک خطہ کے 49 ممالک کے اقتصادی، مالیاتی، سماجی اورماحولیاتی اشاریوں بشمول پائیدارترقی کے اہداف کا تفصیل سے احاطہ کیاگیاہے۔رپورٹ کے مطابق سال 2020ء میں دنیاکی مجموعی پیداوارمیں خطہ کے ممالک کا حصہ 26.3 فیصد تھا جو سال 2019ء میں بڑھ کر34.9 فیصد تک پہنچ گیاہے۔ رپورٹ میں کہا گیاہے کہ ایشیاوبحرلکاہل کے خطہ کے ممالک نے 19 برسوں میں نمایاں پیش رفت کی ہے اوران ممالک میں کروڑوں لوگوں کو کامیابی کے ساتھ غربت سے نکالا گیا۔رپورٹ میں کہاگیاہے کہ 2019 میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری حاصل کرنے والے ممالک میں خطہ کے ممالک کا حصہ ایک تہائی تھا جبکہ عالمی برآمدات میں یہ حصہ 36.5 فیصد تک پہنچ گیاہے۔ دوسری جانب کئی روز کی کمی کے بعد جمعرات کو ملک میں سونے کی فی تولہ قیمت 1900 روپے کا اضافہ ہوگیا، نئی قیمت ایک لاکھ 15 ہزار روپے ہوگئی ہے۔سندھ صرافہ بازار جیولرز ایسوسی ایشن کے مطابق 1900 روپے اضافے کے بعد ملک میں فی تولہ سونے کی قدر ایک لاکھ 15 ہزار روپے ہوگئی۔صرافہ بازار جیولرز ایسوسی ایشن کا مزید کہنا ہے کہ 10 گرام سونے کی قدر ایک ہزار 624 روپے بڑھ کر 98 ہزار 594 روپے ہے۔ایسوسی ایشن کے مطابق عالمی صرافہ میں سونے کی قدر 30 ڈالر اضافے سے ایک ہزار 956 ڈالر فی اونس ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.