اپنا علاج کراؤ باؤ جی باقی گلان چھڈو ۔۔۔۔۔ میاں نواز شریف کو اپنی ہی پارٹی کے اہم ترین رکن اسمبلی نے مشورہ دے دیا ، پاکستانی سیاست میں دخل نہ دینے کی ہدایت

لاہور(ویب ڈیسک)مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء رکن پنجاب اسمبلی میاں جلیل احمد شرقپوری نے کہا ہے میاں نواز شریف جو باتیں کررہے ہیں وہ بے سمجھی اور غصہ کی وجہ سے کررہے ہیں میاں نواز شریف کا بیانیہ درست نہیں ہے وہ لندن علاج کی غرض سے گئے انہیں چاہئے علاج پر توجہ دیں

لندن بیٹھ کر سیاست نہ کریں ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ ایاز صادق کا بیان جھوٹ پر مبنی ہے وہ سمجھدار اور قومی اسمبلی کے اسپیکر رہ چکے ہیں ان کو چاہئے کہ سوچ سمجھ کر بیان بازی کریں انکی اور نواز شریف کی اداروں کے متعلق بیان بازی سے ملک دشمن قوتوں کو تقویت پہنچتی ہے انہوں نے کہا پاک فوج کیخلاف بیان بازی سے ملک دشمن قوتوں کو فائدہ ہوتا ہے پاک فوج دنیا کی سب سے بہترین اور پروفیشنل فورس ہے جس کے نام سے امریکہ بھارت اسرائیل سمیت ہر دشمن کی ٹانگیں کانپتی ہیں، انہوں نے کہا مسلم لیگ ن کے صدر میاں شہباز شریف ہیں انہیں کو قیادت کرنی چاہئے نواز شریف قیادت کی بجائے صرف علاج پر توجہ دیں تو بہتر ہے انہوں نے کہا نواز شریف کی وہ عزت کرتے ہیں اور ہر لیگی عزت کرتا ہے مگر ایسا بیانیہ ہرگز قبول نہیں جس سے قومی اداروں پر تنقید ہو کئی باتیں سچ ہوتی ہیں مگر وہ سچ جو شرارت پیدا کرے نہیں بولنا چاہئے اور شریعت بھی ایسے سچ کی اجازت نہیں دیتی انہوں نے کہا وہ مسلم لیگی ہیں مگر کسی ایسے جلوس جلسے ریلی یا دھرنے کی حمائت یا شمولیت نہیں کریں گے جس سے ملک میں افراتفری کا ماحول پیدا ہو،سیاست اسمبلی کے اندر اور بیان بازی سے بھی کی جاسکتی ہے انہوں نے کہا یہ حقیقت ہے حکومت سے مہنگائی کنٹرول نہیں ہوسکی مگر مہنگائی کو ایشو بناکر جلسے جلوسوں دھرنوں کی سیاست کرنا اور جھوٹے الزام لگانا ریاستی اداروں کیخلاف سازش کے مترادف ہے انہوں نے کہا میری وزیر اعظم وزیر اعلیٰ سے ملاقاتوں پر بات کی جاتی ہے جوکہ غلط بات ہے میں جب ایم این اے رہا ہوں اس وقت بھی وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ سے ملتا تھا مشرف سے اصولی اختلاف کیا اور حلف نہیں اٹھایا تھا جبکہ اختلاف اور باتیں کرنے والے انہیں لیگیوں نے مشرف سے حلف اٹھایا تھا دوہرا معیار سیاست نہیں ہونا چاہئے انہوں نے کہا ان کیساتھ انہیں کی پارٹی کے ایم پی اے میاں رووف نے بدتمیزی کی جسکی وزیر اعظم وزیر اعلیٰ اسپیکر پنجاب اسمبلی یہاں تک کہ اقلیتوں نے مزمت کی مگر نواز شریف مریم نواز شہباز شریف سمیت کسی لیگی نے مذمت نہ کی جوکہ قابل مزمت بات ہے جمہوری ہوں اور اختلاف رائے کا حق رکھتا ہوں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.