والدین کی پریشانی کی حد نہ رہے

پہلوانوں کے شہر گوجرانوالہ سے 3 خواتین گر-فتار، یہ چھوٹے بچوں کے ساتھ کیا کرتی تھیں؟ والدین کی پریشانی کی حد نہ رہے

گوجرانوالہ (نیوز ڈیسک) پہلوانوں کے شہر گوجرانوالہ سے بچوں کو ا-غو-ا کرنے والی تین خواتین کو گر-فتار کرلیا گیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ گینگ میں شامل یہ تینوں خواتین قریبی رشتہ دار ہیں جو چھوٹے بچوں کو ا-غو-ا کرکے بے اولاد جوڑوں کو فروخت کرتی تھیں۔ ان میں سے 2 خواتین نے 13 نومبر کو فیروز والا سے 6 سال کے بچے کو ا-غو-ا کیا اور اسے ڈیڑھ لاکھ روپے میں آگے ایک بے اولاد خاتون کو فروخت کردیا۔ایس پی سول لائن کا کہنا ہے کہ مغوی بچے کو بازیاب کرکے گروہ میں شامل تین خواتین کو گ-رفتار کیا گیا ہے۔ یہ خواتین بچوں کو دوسرے اضلاع میں فروخت کرتی تھیں۔ دوسری جانب پاکستان میں لاکھوں بے روزگار امارات میں ملازمت کے خواہش مند ہیں، ان کے لیے ایک انتہائی شاندار خوش خبری آ گئی ہے۔ ابوظبی کی جانب سے اماراتی شہریوں ، مکینوں اور غیرمکینوں کے لیے ایک نیا فری لانسر لائسنس متعارف کرایا ہے،اس کے تحت وہ اس امارت میں 48 اقسام کے کام یا کاروباری سرگرمیاں انجام سے سکتے ہیں۔ابو ظبی کے محکمہ اقتصادی ترقی نے ایک اعلامیے میں بتایا ہے کہ نئے لائسنس کے تحت مذکورہ بالا افراد کسی مقامی سروس ایجنٹ یا کسی شراکت دار اماراتی شہری کے بغیر بھی کام کرسکیں گے اور انھیں ان کی خدمات کی ضرورت نہیں ہوگی۔العربیہ نیوز کے مطابق قبل ازیں غیرملکی ورکر ابوظبی میں کسی کمپنی کے ملازم ہونے کی صورت ہی میں کام کرسکتے تھے۔نیز فری لانس کاروبار کے لیے لائسنس صرف یو اے ای کے شہریوں ہی کو جاری کیے جاتے تھے۔اب نئے فری لانسر لائسنس کے تحت یو اے ای کے غیر شہری اپنی اقامت گاہ یا کسی مجاز جگہ سے کاروباری سرگرمیاں انجام دے سکیں گے۔مجاز کاروباری سرگرمیاں جن کاروباری سرگرمیوں کے لیے فری لانسروں کو لائسنس جاری کیے جارہے ہیں،ان میں فیشن ڈیزائن ، ملبوسات ، قدرتی اور جمالیاتی زیب وآرائش کا انتظام ، فوٹو گرافی اسٹوڈیو ، ایونٹ فوٹو گرافی ،تحائف کی پیکجنگ ، جیولری ڈیزائن ، ویب ڈیزائن ، پراجیکٹ ڈیزائن اور مینجمنٹ سروسز ، ترجمہ ، کیلی گرافی ، ڈرائنگ ، شماریاتی مشاورت اور مارکیٹنگ آپریشن مینجمنٹ شامل ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *