سافٹ وئیر چینج ۔۔۔!!!مریم نواز نے کارکنوں کو فوج کیخلاف نعرے اور الزام تراشی کرنے سے روک دیا

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کی مرکزی نائب صدر مریم نواز نے کارکنوں کو فوج کی وردی کیخلاف نعرے اور الزام تراشی سے روک دیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ میرے فوجیوں کی وہ وردی ہے جو سیاچن میں ہماری حفاظت کرتے شہید ہوتے ہیں،جب ان کو سپردخاک کیا جاتا ہے تو یہ وردیاں خون میں

لت پت ہوتی ہیں،ہم نے وردی پر الزام نہیں لگانا بلکہ وردی کو داغدار کرنے والے کرداروں کو پہچاننا ہے۔انہوں نے شیرجوان تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آئین کی کتاب کو دیکھو اور پڑھو، کہ نوازشریف کے کیامطالبات ہیں؟آئین میں سب لکھا ہے کہ کس کا کیا کیا حق ہے،نوازشریف کا اگر ایک بھی مطالبہ آئین سے متصادم ہے تو نوازشریف اور مریم نواز کا بالکل ساتھ نہیں دینا۔لیکن نوازشریف آئین کی پاسداری اور حلف کی پاسداری کی بات کررہا ہے۔ انہوں نے تقریب میں وردی پر نعرے بازی لگانے سے منع کیا اور کہا ہم نے وردی کے اوپر الزام نہیں لگانا،یہ میرے فوجیوں کی وہ وردی ہے جو سیاچن میں ہماری حفاظت کرتے شہید ہوتے ہیں،جن کی مائیں ، بہنیں، بیٹیاں اور بچے ، جب اس وردی میں ان کو سپرد خاک کرنے لایا جاتا ہے تو وہ وردیاں خون میں لت پت ہوتی ہیں۔ہم نے وردی کے اوپر الزام نہیں لگانا، ہم نے اس وردی کو داغدار کرنے والے دوتین کرداروں کو پہچاننا ہے۔ان کرداروں کو پھر ہم نے وردی کی آڑ نہیں لینے دینی۔جس پر شرکاء نے صرف پاپا جونر کے نعرے لگائے۔ مریم نواز نے کہا کہ پاپاجونز اور پیزا والوں کیخلاف جو آواز اٹھ رہی ہے نوازشریف کو سمجھ ہے کہ جنرل عاصم سلیم باجوہ قوم کے جوان سوال کررہے ہیں کہ آپ کے پاس اربوں کی جائیدادیں کہاں سے آئیں؟ ایک نوکری پیشہ ہونے کے باعث کس طرح کھربوں کی جائیدادیں دنیا میں پھیلا دیں۔اگر تین بار کا وزیراعظم اور میں سینکڑوں پیشیاں بھگت سکتی ہوں۔ تو پھر سب کو جواب دینا ہوگا۔ نوازشریف آزادی کی بات کررہا ہے، آئین کی سبز کتاب کو جوتوں کے نیچے روندنے والوں کو نشان عبرت بناؤ، نوازشریف کہتا ہے سوال پوچھو کس نے ووٹ کو چوری کیا۔ ووٹ کو عزت دو صرف نعرہ نہیں ہے، جب ووٹ کو عزت ملتی ہے تو لیپ ٹاپس، اسکالرشپس، وظائف، سکول کالجز، یونیورسٹیاں ملتی ہیں، ہسپتال بنتے ہیں، انٹرن شپس ملتی ہیں۔ یوتھ لون ملتے ہیں، 22، 22گھنٹے کی لوڈشیڈنگ ختم ہوجاتی ہے، بم دھماکے ختم ہوجاتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.