نہ پی ٹی آئی اور نہ ہی پیپلز پارٹی۔۔۔ عبد القادر بلوچ کس سیاسی جماعت میں شامل ہونگے ؟ فیصلہ سنا دیا

لاہور(ویب ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی میں شمولیت کا کوئی ارادہ نہیں ہے ، پاکستان میں مذہبی جماعتیں بھی ہیں ۔ نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کے دوران ن لیگ سے کنارہ کشی اختیار کرنے والے سینئر رہنما عبد القادر بلوچ نے کہا ہے کہ نواز شریف کے فوج کیخلاف بیانیے کے بعد

کنارہ کشی کا فیصلہ کر لیا تھا ۔ ان کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف میں شمولیت اس لیے اختیار نہیں کروں گا کیونکہ ان کے پاس مسائل کے حل کا وژن موجود نہیں ہے اور ضروری نہیں پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کر لوں ملک میں بہت ساری مذہبی جماعتیں بھی بڑی محنت کیساتھ اپنے کام کر رہی ہیں ۔ عبد القادر بلوچ نےکہا ہے کہ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے یہ الفاظ ثنا ء اللہ زہری کیلئے کہے تھے کہ وہ اسٹیج پر نہیں آئیں گے اگر یہ سب ہو بھی گیا تو بعد معافی مانگ لی جاتی تو شاید ثنا اللہ زہری کے استعفیٰ تک نوبت نہ پہنچتی ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جب پاکستان مسلم لیگ علیحدگی کا اعلان کیا تو اس وقت شاہد خاقان عباسی ، احسن اقبال سمیت مصدق ملک نے فیصلہ واپس لینے کیلئے دبائو ڈالا تھا ۔یاد رہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) بلوچستان کے صدر لیفٹیننٹ جنرل (ر) عبدالقادر بلوچ نے قیادت سے ناراضی کے بعد پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ کیا تھا۔اپنے بیان میں عبدالقادر بلوچ کا کہنا تھاکہ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (‎پی ڈی ایم) کے پلیٹ فارم سے افواج پاکستان کے خلاف نازیبا زبان استعمال ہوئی، ‎افواج پاکستان کو ادارے کے طور پر نشانہ بنانا قابل قبول نہیں۔انہوں نے کہا کہ ‎مسلم لیگ (ن) سے علیحدگی کی واحد وجہ فوج کے خلاف بیانیہ ہے، ‎میں خود فوجی رہا ہوں، یہ سب قابل برداشت نہیں۔عبدالقادر بلوچ کا کہنا تھا کہ ‎مستقبل کا فی الوقت کوئی فیصلہ نہیں کیا، ‎اتنے وسائل نہیں کہ مسلم لیگ کا کوئی اور دھڑا بناؤں، ‎ہوسکتا ہے کسی جماعت میں شمولیت اختیار کروں یا سیاست سے کنارہ کشی کرلوں۔ان کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعلیٰ ثناءاللہ زہری کو اسٹیج پر نہ بلانے پربات ہوسکتی تھی۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *