منصوبے پر باقاعدہ کام کا آغاز ہوگا

سی پیک کے سب سے اہم اور 7 ارب ڈالرز کے مہنگے ترین منصوبے پر رواں ماہ کام کے آغاز کی نوید سنا دی گئی
وفاقی وزیر برائے ریلوے شیخ رشید احمد کے مطابق ایم ایل 1 منصوبے کا ٹینڈر رواں ماہ جاری کر دیا جائے گا، منصوبے کی تکمیل سے کراچی تا لاہور ٹرین کا سفر صرف 7 گھنٹے تک محدود ہو جائے گا

لاہور (اُ10 نومبر2020ء) سی پیک کے سب سے اہم اور 7 ارب ڈالرز کے مہنگے ترین منصوبے پر رواں ماہ کام کے آغاز کی نوید سنا دی گئی، وفاقی وزیر برائے ریلوے شیخ رشید احمد کے مطابق ایم ایل 1 منصوبے کا ٹینڈر رواں ماہ جاری کر دیا جائے گا، منصوبے کی تکمیل سے کراچی تا لاہور ٹرین کا سفر صرف 7 گھنٹے تک محدود ہو جائے گا۔ عرب نیوز میں شائع کردہ رپورٹ کے مطابق پاکستان کے وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے سی پیک کے سب سے اہم اور اسٹر-یٹیجک نوعیت کے منصوبے ایم ایل 1 کے آغاز میں تاخیر کی خبروں کی تردید کی ہے۔وزیر ریلوے نے واضح کیا ہے کہ رواں ماہ کے دوران ایم ایل 1 کا ٹینڈر جاری کر دیا جائے گا، جس کے بعد منصوبے پر باقاعدہ کام کا آغاز ہوگا۔ اس منصوبے کی پاکستان کی تاریخ کے اہم ترین منصوبوں میں سے ایک قرار دیا جا رہا ہے، جو معاشی سرگرمیوں میں اضافے کا باعث بنے گا۔پاکستان کی تاریخ کے سب سے اہم اور سی پیک میں شامل اسٹریٹیجک نوعیت کے منصوبے ایم ایل ون کے حوالے سے ماہرین کا بتانا ہے کہ پاکستان ریلوے کی ایم ایل 1 کی تعمیر نو اور توسیعی منصوبے کی تکمیل کے بعد کراچی اور لاہور کے درمیان ٹرین کا سفر صرف 7 گھنٹے کا رہ جائے گا۔یہ منصوبہ لاگت کے اعتبار سے ریلوے کی تاریخ کا سب سے بڑا منصوبہ ہوگا۔بتایا گیا ہے کہ ایم ایل 1 منصوبہ سی پیک کا حصہ ہے جس پر 6 ارب 80 کروڑ امریکی ڈالر کی لاگت کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ پاکستان میں ریلوے کا کردار بہت اہمیت کا حامل ہے کیونکہ یہ سفر کا ایک سستا اور آرام دہ طریقہ ہے، اس منصوبے سے سیاحت کو بھی فروغ دیا جا سکے گا۔ بتایا گیا ہے کہ منصوبے کے تحت پہلے سے موجود ایک ہزار 872 کلومیٹر طویل اس ٹریک کو 2 رویہ بھی کیا جائے گا جبکہ ٹریک کی اپ گریڈیشن سے اس پر چلنے والی ٹرینوں کی موجودہ رفتار 110 کلومیٹر فی گھنٹہ سے بڑھ کر 160 کلومیٹر فی گھنٹہ ہوجائے گی۔اس منصوبے میں کمپیوٹرائزڈ سگنل و کنٹرول سسٹم بھی شامل ہیں جبکہ گریڈ سیپریشن کے ذریعے ٹرینوں کے آپریشن کو محفوظ بھی بنایا جائے گا۔ وزارت ریلوے کا کہنا ہے کہ ایک انقلابی منصوبہ ہے جس سے پاکستان ریلوے کے تمام ڈھانچے کی تشکیل نوہوگی،اس منصوبے سے روزگارکے وسیع مواقع بھی پیدا ہوں گے۔ ایم ایل ون کسی پھاٹک کے بغیر ایک ایسی ریلوے لائن ہوگی جس سے کراچی ،لاہور اورلاہورراولپنڈی کے درمیان سفر کے دورانیے میں واضح کمی آئے گی۔ منصوبے سے ریلوے کے حا-دثات میں بھی کمی آئے گی اور لوگوں کے لئے ڈیڑھ لاکھ ملازمتوں کے مواقع پیداہوں گے۔ ایم ایل ون منصوبے کے لئے کم شرح پرقرض حاصل کیاجائے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *