’’جب میرے والد نے کہا تھا کہ آپکو میری عمر لگ جائے تو اُس وقت۔۔‘‘ اعجازالحق نے شریف برادران کے بارے میں معنی خیز بات کہہ ڈالی

راولپنڈی (ویب ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ضیاءکے صدر اعجاز الحق نے کہا ہے کہ نواز شریف کا بیانیہ اُس وقت کہاں تھا جب ضیاء الحق شہید نے کہاتھا کہ آپ کو میری عمر لگ جائے،ڈی جی آئی ایس آئی سے ملنا تو دور کی بات، شہباز شریف اُن کے رشتہ داروں کے گھر نظر آئے،

کسی کی کیاجرات کہ کوئی افواج کےآگے بندھ باندھے، نواز شریف کہتے ہیں کہ ڈھائی بجے آئی ایس آئی چیف نے استعفیٰ کا کہا، اگر ایسا ہے تو وہ بہت ہی ڈرپوک وزیر اعظم تھے،کبھی ادارے بھی استعفیٰ کی بات کرتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق راولپنڈی میں استحکام پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اعجاز الحق نے کہاکہ دشمن کو پتا ہے کہ پاکستان کی فوج ملک کو کمزور نہیں ہونے دے گی،قوم پر بھاری بیانیہ کا حصہ نہیں بننا چاہتا، نواز شریف کہتا ہے کہ ڈھائی بجے آئی ایس آئی چیف نے استعفیٰ کا کہا،اگر ایسا ہےتوبہت ہی ڈرپوک وزیراعظم تھے، کبھی ادارے بھی استعفیٰ کی بات کرتے ہیں؟ایک صاحب کہتے ہیں کہ آرمی چیف سے ملاقات ہوئی،کہتے ہیں کہ جو نواز شریف کے خلاف کر رہے ہیں بیچ میں نہ آئیں،غفور حیدری صاحب حلف پر یہ بات کریں استعفیٰ دے دونگا۔ انہوں نے کہاکہ ڈی جی آئی ایس آئی سے ملنا دور کی بات، شہباز شریف اُن کے رشتہ داروں کے گھر نظر آئے،کسی کی کیا جرات کہ کوئی افواج کے آگے بندھ باندھے، مولانا فضل الرحمن نے پارلیمنٹ میں کہا مارگلہ کی پہاڑیوں تک شر پسند پہنچ گئے،80 ہزار لوگ بد امنی کے خلاف لڑائی میں Shaheed ہوئے، بانی متحدہ نے پاکستان کو غلطی قرار دیا۔ کلبھوشن یادیوو جیسے لوگ پاکستان بھیجے گئے، ڈھائی ارب سے زیادہ رقم فرقہ واریت کو طول دینے کیلئے بھیجی گئی،ہمارے علماء کی مہربانی ہے کہ محرم میں قابو کرلیا۔انہوں نے کہاکہ کہاں تھا بیانیہ جب ضیاء الحق نے کہا کہ آپ کو میری عمر لگ جائے،جنرل جیلانی کے پاس بیٹھتے وقت نواز شریف کا بیانیہ کدھر تھا؟استحکام پاکستان کا سلسلہ رکنے والا نہیں،وہ دن بھی یاد ہے جب کہا گیا کہ ممبئی حملہ آور پاکستان سے بھیجا گیا.انہوں نے کہاکہ افغان مجاہدین کو سلام پیش کریں جنہوں نے آپ کی سلامتی کیلئے قربانی دی،سنا ہے آپ اب سائنسدان بھی بن گئے ہیں،ٹاما، ٹیما ٹومی کہنے والوں کو میزائل کا نام تک نہیں آتا

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *