عمران خان کو ٹف ٹائم دینے کی تیاری مکمل! حکومت کی اتحادی جماعت بھی اپوزیشن کے ساتھ جا ملی، مولانا کو اپوزیشن اتحاد کا سربراہ مقرر کر دیا گیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) جے یو آئی (ف )کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کو اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم کا سربراہ مقرر کردیاگیاہے۔ ہفتہ کو پاکستان ڈیموکریٹک مومینٹ کا ویڈیو لنک اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔اجلاس میں(ن) لیگ قائد نوازشریف،چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری،جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل

الرحمان اور بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر مینگل اور دیگر جماعتوں کے سربراہوں نے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی۔اجلاس کے دوران ملکی سیاسی صورتحال سمیت اے پی سی میں ہونے والے فیصلوں پر عملدرآمد کا جائزہ لیاگیا۔اجلاس میں اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے متفقہ طور پر جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کو اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم کا سربراہ مقرر کیاگیا۔(ن )لیگ کی جانب سے مولانا فضل الرحمان کا نام پی ڈی ایم سربراہ کے لیے تجویز کیاگیاتھا۔اجلاس کے آخر میں مولانا فضل الرحمن نے دعائی کروائی ۔ دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ ن کی رہنما اور پنجاب اسمبلی کی رکن عظمیٰ بخاری نےفیاض الحسن چوہان کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے “مفت مشورہ “بھی دے ڈالا ،ایسی بات کہہ دی کہ صوبائی وزیر اطلاعات پنجاب غصے سے لال پیلے ہو جائیں ۔نجی ٹی وی کے مطابق لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن پنجاب کی ترجمان عظمی بخاری نے فیاض الحسن چوہان پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ چوہان صاحب،میرا مشورہ ہے کہ آپ اپنے قد سے زیادہ بڑی بات نہ کیا کریں،آپ صرف نالی گٹر تک کی باتیں کرتے اچھے لگتے ہیں،چوہان صاحب آپ میرے بھائی ہیں میں آپ کا بہت احترام کرتی ہوں لیکن آپ جتنا کم بولتے ہیں ،جتنا آپ کوڑا کرکٹ اورگلی نالی بارے بولتے ہیں ٹھیک رہتے ہیں،جیسے ہی آپ اپنی اوقات سے بڑی بات کرنے کی کوشش کرتے ہیں ،آپ ایکسپوز ہو جاتے ہیں ۔انہوں نےکہاکہ آج آپ نےکہاکہ مسلم لیگ ن پنجاب کےصدرحمزہ شہبازشریف ہیں،اوہ بئی اتنی بوکھلاہٹ؟رانا ثناء اللہ جیسا شیر تمہیں بھول گیا ،ہمارا پنجاب کا صدر رانا ثناء اللہ ہے،پھر آپ نےکہاکہ وہ ٹویٹ کیوں نہیں کرتے،وہ بولتےکیوں نہیں؟یہ سہولت صرف اُن حکومتی ایک دو لوگوں کو ملتی ہے جنہیں بیلسنگ ایکٹ کےلئےاندربھیجاجاتاہے،ہمارےلوگوں کو ٹویٹ کرنےکی سہولت نہیں ملتی۔عظمیٰ بخاری نے کہا کہ فیاض چوہان نے آج ایک اور پھلجڑی چھوڑنے کی کوشش کی ،جب آپ کو قانونی معاملات کا نہیں پتا تو پھر بولتے کیوں ہو؟ آپ کو یہ نہیں پتا کہ جب ضمانت کے لئے نظر آئے کہ ججز کیا فیصلہ دینے والے ہیں تو نناوے اعشاریہ نناوے فیصد وکلا فیصلہ کرتے ہیں کہ درخواست ضمانت واپس لے لی جائے تاکہ ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ میں اگلی آپشن استعمال کی جاسکےلیکن یہ عقل کی باتیں ہیں جو آپ کو کم ہی سمجھ آئیں گی۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *