نواز شریف کی تقاریر میڈیا پر نشر کرنے پر پابندی عائد

زیر التوا مقدمات کی سماعت تک کسی بھی ملزم کی تقریر یا بیان نشر نہیں کیا جائے گا، عدالت سے اشتہاری قرار دیے گئے مجرم کو بھی کوریج دینے کی اجازت نہیں ہوگی: پیمرا

اسلام آباد ( 01 اکتوبر2020ء) پیمرا نے ٹی وی چینلز کو حکم دیا ہے کہ نواز شریف کی تقریر یا بیان ٹی وی پر نشر نہ کیا جائے۔ پیمرا نوٹیفیکیشن کے مطابق زیر التوا مقدمات کی سماعت تک کسی بھی ملزم کی تقریر یا بیان نشر نہیں کیا جائے گا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق مطابق پیمرا کی جانب سے جاری نوٹیفیکیشن میں ٹی وی چینلز کو ہدایت جاری کی گئی ہے کہ نواز شریف ایک اشتہاری مجرم ہیں، عدالت کی جانب سے ان کے وارنٹ جاری ہوچکے ہیں ۔سابق وزیراعظم کی کوئی بھی تقریر یا بیان اس وقت تک نشر نہیں کیا جائے جب تک ان کے مقدمے کا فیصلہ نہیں آ جاتا۔پیمرا نوٹیفیکیشن میں کہا گیا ہے کہ عدلیہ کی جانب سے مفرور قرار دیئے گئے مجرموں کو ٹی وی پر نشر نہیں کیا جائے۔ واضح رہے کہ وفاقی وزراء آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی ) میں میاں محمد نواز شریف کی تقریر نشر کرنے کی مخالفت کر چکے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ندیم افضل چن نے ایک نجی ٹی وی انٹرویو میں کہا تھا کہ حکومت کو چاہیے نواز شریف کے بیانات نشر کرنے پر پابندی لگا دی جائے۔ واضح رہے کہ اے پی سی میں نوازشریف کو تقریر کی اجازت وزیراعظم عمران خان کے حکم پر دی گئی تھی۔ عمران خان نے وزراء کے مطالبے پر کہا تھا کہ کسی کی تقریر نشر نہ کرنا آزادی اظہار رائے کے خلاف ہے۔

اس لیے ہم کسی کو تقریر کرنے سے نہیں روک سکتے۔ وزیراعظم عمران خان نے نواز شریف کی اے پی سی میں تقریر کے بعد کہا تھا کہ نواز شریف نے اپنی تقریر سے خود کو ایکسپوز کردیا۔ یاد رہے کہ لندن میں موجود نواز شریف کی جانب سے اپنی تقاریر میں اداروں کیخلاف ہرزہ سرائی کی گئی ہے، جبکہ گزشتہ روز انہوں نے پاکستان کے میزائل پروگرام کے حوالے سے بھی ایک قومی راز سے پردہ اٹھا دیا تھا۔ اس تمام صورتحال میں اب پیمرا نے نواز شریف سمیت تمام اشتہاری مجرموں کی میڈیا کوریج پر پابندی عائد کر دی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *