کسی غریب کی مجبوری سے فائدہ اٹھانے والا ہم میں سے نہیں ۔۔۔وزیراعظم عمران خان کا ذخیرہ اندوزوں اور منافع خوروں کے خلاف سخت ایکشن کا فیصلہ

اسلا م آباد(ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ذخیرہ اندوزی او رمنافع خوری کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گا۔ نجی چینل دنیا نیوز کے مطابق وزیراعظم کی زیر صدارت مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لیے اجلاس ہوا، اجلاس میں اشیائے ضروریہ کی قیمتوں پر غور کیا گیا، گندم اور چینی کی

دستیابی اور دیگر اشیاءکی قیمتوں پر غور کیا ۔ اجلاس میں درآمد کی گئی گندم کا شیڈول پیش کیا گیا ، وزیراعظم کو بریفنگ دی گئی کہ درآمد چینی کم نرخوں پر عوام کو میسر ہوگی۔ وزیراعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی کے لیے اقدامات کیے جائیں،ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے۔وزیراعظم عمران خان نے مہنگائی میں کمی کیلئے ہنگامی اقدامات کی یقین دہانی کرواتے ہوئے کہا کہ مشاورت جاری ہے، حکومت جلد ایکشن پلان پر عملدرآمد شروع کرے گی، عام آدمی کو ریلیف دینے کے لیے تمام سرکاری مشینری کو متحرک کریں گے، آنے والے دنوں میں ہماری اب پوری توجہ مہنگائی کنٹرول کرنے پر ہوگی اور ساری صورتحال خود مانیٹر کررہا ہوں، دیکھتے ہیں اب مافیا کیا کرتا ہے؟۔کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ کابینہ اجلاس میں اشیاء کی قیمتوں میں کمی کیلئے اقدامات پر غور کیا گیا،مہنگائی کو کنٹرول کرنے کیلئے جامع اقدامات کیے جا رہے ہیں،حکومتی اقدامات کے نتیجے میں اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں واضح کمی ہوگی،آنے والے دنوں میں مہنگائی کا مسئلہ حل ہوجائے گا،خیبر پختونخوا میں بارشوں سے گندم کی فصل کو نقصان پہنچا،ملک میں ضرورت کے مطابق گندم کے ذخائر موجود ہیں،سندھ حکومت نے جان بوجھ کر گندم کی ریلیز روکے رکھی،سندھ حکومت کی جانب سے گندم بروقت جاری نہ کرنے سے بھی قیمتوں میں اضافہ ہوا، بالآخر سندھ حکومت نے 15 یا 16 تاریخ سے گندم ریلیز کرنے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ انہوں نے سیاسی بدنیتی کرتے ہوئے گندم کی ترسیل روکی تھی، کراچی میں 20 کلو آٹے کی قیمت 13 سو سے 14سو روپے کے درمیان ہے جبکہ خیبرپختونخوا اتنی ہی مقدار میں آٹے کی قیمت 11 سو سے 12 سو روپے ہے۔مہنگائی کو کنٹرول رکھنے کے لیے جو حکمت عملی اختیار کی جائے گی وہ حقیقی ہے، ایسا نہیں کہ اس حکمت عملی کو روبہ عمل نہیں بنایا جاسکے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *