کون کہتا ہے عمران خان کو فوج لائی ، مجھے صرف ایک بات بتاؤ۔۔۔۔؟ اوریا مقبول جان کپتان کی حمایت میں میدان میں آگئے ، تنقید کرنے والوں کو کھلا چیلنج

لاہور (ویب ڈیسک )گروپ ایڈیٹر روز نامہ 92نیوز ارشاد احمد عارف نے کہا ہے کہ اس وقت ملک ، علاقائی حالات ایسے نہیں ہیں کہ کوئی تحریک کھڑی کی جائے یا حکومت کو گرا دیا جائے اور عام انتخابات ہوسکیں۔پروگرام کراس ٹاک میں اینکر پرسن اسد اللہ خان سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر

امریکہ جیسا ملک جس میں الیکشن کی تاریخ بھی طے ہے وہاں پر شکوک وشبہات ہیں کہ الیکشن ہونگے یا نہیں اس کے باوجود پاکستان میں توقع کی جارہی ہے کہ یہاں پر الیکشن ہوجائینگے ۔ سینئر تجزیہ کار اوریا مقبول جان نے کہا ہے کہ یہ کہا جاتا ہے کہ فوج عمران خان کو لے کر آئی ہے ، سوال یہ ہے کہ فوج کس کو نہیں لے کر آئی۔ تاریخ اٹھا لیں تو کون ہے جو اپنے زور پر حکومت میں آیا، وہ چہرے اور ہوتے ہیں جو انقلاب لایا کرتے ہیں ۔سینئر تجزیہ کار شاہین صہبائی نے کہا ہے کہ آرمی چیف نے صاف انداز میں بات کی ہے کہ آئین اور حکومت جو کہے گی ہم وہ کرینگے ،فوج اور اسٹیبلشمنٹ نے اپنی پوزیشن بتا دی ہے کہ ہم کہاں کھڑے ہیں۔اپوزیشن کو چاہئے کہ ان پر جو کیسز ہیں ان کا مقابلہ کریں ،یہ کوئی طریقہ نہیں ہے کہ سڑکوں پر آئیں اور ہر چیز کو لپیٹ دیں، یہ کوئی مسئلے کا حل نہیں ۔سینئر تجزیہ کار ایاز خان نے کہا ہے کہ عمران خان تواتر سے کہہ رہے ہیں کہ فوج ہمارے ساتھ ہے اور بالکل ایک پیج پر ہیں۔2013کے الیکشن میں عمران کی مقبولیت تھی مگر فیصلہ یہ ہوا کہ نوازشریف کو سلیکٹ کرنا ہے اور اسے کرلیا گیا،عمران کو پانچ سال کیلئے منتخب کیا گیا ہے اسے مدت پوری کرنے دینی چاہئے ۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *