بریکنگ نیوز: (ن) لیگ کا استعفے دینے کا فیصلہ کن اعلان۔۔۔ کب کیا ہونیوالا ہے ؟ ملکی سیاست میں بھونچال

لاہور (ویب ڈیسک )اسمبلیوں سے استعفوں کے حوالے سے مسلم لیگ ن نے نیا کارڈ کھیلنے کا فیصلہ کرلیا، استعفوں کے معاملے پر جوڑ توڑ نہ ہو جائے وقت سے پہلے ہی اراکین اسمبلی سے استعفے لیکر قیادت کے حوالے کرنے پر کام شروع کردیاگیا، اس حوالے سے متحرک رہنماؤں کی مختلف اراکین اسمبلی پر ڈیوٹیاں لگا دی

گئی ہیں۔ مصدقہ ذرائع کا کہنا ہے پنجاب اسمبلی میں ن لیگ کے باغی گروپ ،پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں متعدد ارکا ن کی عدم شرکت اورفیٹف بل پاس ہو جانے کے بعد ن لیگ کے اندر ایک بڑ ے گروپ نے قیادت کو اس پر راضی کر لیا ہے کہ اسمبلیوں سے استعفوں کے معاملے پر جنوری یا فروری کا انتظار کرنے کی بجائے اراکین اسمبلی سے استعفے لیکر پہلے ہی پاس رکھ لینے چاہئیں تا کہ باغی اراکین اسمبلی کا ڈر نہ رہے ۔ ن لیگ کے اندر پلان بن چکا ہے کہ جلد پہلے مرحلے میں صوبائی اور دوسرے مرحلے میں قومی اسمبلی کے ارکان کی میٹنگ ہو گی جس میں حاضری کویقینی بنایا جائے گا،میٹنگز میں اہم لیگی رہنما نوازشریف کے خطاب سے پہلے اپنے استعفے قیادت کو پیش کریں گے اور اسی وقت اجلا س میں موجود تمام ارکان کو مجبور کریں گے کہ وہ بھی یہیں پر اپنے استعفے لکھ کر قیادت کے حوالے کر دیں،قیادت کو کہا جائے گا کہ وہ مناسب وقت پر استعفے پیش کرنے کے مجاز ہوں گے ۔ یہی طریقہ کارلیگی اراکین قومی اسمبلی کے ساتھ بھی کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق ن لیگ ایک تیر سے دو شکار کرے گی، استعفے لینے کے بعد پی ڈی ایم میں شامل تمام جماعتوں کو تاثر دیا جائے گا کہ ہم نے استعفے لیکر پہل کر دی، دیگرجماعتیں بھی اپنے اراکین کے استعفے اکٹھے کریں۔ اس ضمن میں اہم لیگی رہنماؤں کی نہ صرف مشاورت مکمل ہو چکی ہے بلکہ نوازشریف نے بھی اس کی اجازت دے دی ہے ۔کچھ لیگی رہنماؤں نے اس کی مخالفت کی اور کہا کہ ایسا کرنے سے بے اعتمادی کی فضا پیدا ہو گی، اگر استعفے اسمبلی میں پیش بھی کر دیئے گئے تو تصدیق کیلئے جب سپیکر چیمبر بلوائے گا تو جو ارکان نہ گئے تو اس سے مزید پوزیشن خراب ہو گی ۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *