پاکستانی سیاست کا اونٹ نئی کروٹ بدلنے کو تیار! حالات سیاستدانوں کے ہاتھوں سے نکل کر ’مہربانوں‘ کے ہاتھ جانا شروع، بڑی خبر

لاہور (نیوز ڈیسک ) سینئر صحافی سلمان غنی نے دعویٰ کیا ہے کہ ڈائیلاگ نہ ہونے کی وجہ سے معاملات سیاستدانوں کے ہاتھوں سے نکل کر ’مہربانوں‘ کے ہاتھوں میں جا رہے ہیں۔ٹوئٹر پر اظہار خیال کرتے ہوئے سلمان غنی نے کہا کہ حکومت اور اپوزیشن کے درمیان ڈیڈلاک کا عمل ظاہر کر رہا ہے کہ

کوئی بھی تاریخ سے سبق سیکھنے کو تیار نہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہر آنے والا دن بتا رہا ہے کہ معاملات سیاستدانوں کے ہاتھ سے نکل رہے ہیں اور مہربانوں کے ہاتھ میں جا رہے ہیں۔ دیکھتے ہیں کہ سیاست کا اونٹ کس کروٹ بیٹھتا ہے۔

دوسری جانب اپنے وی لاگ میں سینئر صحافی اور وزیر اعظم عمران خان کے کزن حفیظ اللہ نیازی کا کہنا تھا کہ پاکستان اس وقت بہت مشکل دور سے گزر رہا ہے، ایاز صادق کے بیان پر انہیں غدار قرار دینے کا سلسلہ چل نکلا ہے، لاہور کی شاہراؤں پر مختلف قسم کے پوسٹر آویزاں کیے جا چکے ہیں ، لیکن یہ حالات وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے پیدا کیے جا رہے ہیں کیونکہ وہ ملک کو انارکی کی طرف بھیجنا چاہتے ہیں۔ حفیظ اللہ نیازی کا کہنا ہے کہ میرے ذرائع مجھے یہ بتا رہے ہیں کہ اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ مقتدر حلقوں کی بات چل رہی ہے کہ شاہد خاقان عباسی کو وزیر اعظم بنا دیا جائے، یہ شرط بہرحال پاکستان کے حق میں نہیں لیکن اتنی خطرناک نہیں ہے جتنی حکومت خطرناک مراحل میں اس پاکستان کو لے کر جا چکی ہے۔ شاہد خاقان عباسی کو وزیر اعظم بنا دینا چاہیئے، لیکن پہلے ملک میں نئے انتخابات ہونے چاہیئے اور اسکے بعد آئینی طور پر یہ قدم اُٹھانا چاہیئے، کیونکہ آئین نافذ ہوگا تو ہی ریاست بچے گی۔ ایاز صادق نے یہ کہا کہ شاہ محمود قریشی کی ٹانگیں کانپ رہی تھیں اب مجھے سمجھ نہیں آرہی ہے کہ شاہ محمود قریشی کی ٹانگیں کیا پاکستان کی ٹانگیں ہیں جو اگلے ہی دن پاک فوج کو وضاحت دینی پڑ گئی؟ حفیظ اللہ نیازی کا کیا کہنا تھا؟ ویڈیو آپ بھی دیکھیں :

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.