’خرید لو‘ یا ’دھمکائو،نواز شریف دوبارہ اپنی پرانی روش پر چل نکلے، کس کس جج کو خریدنے کے لیے بریف کیس کا استعمال کیا گیا ؟ ملکی سیاست کی بنیادیں ہلا دینے والا تہلکہ خیز انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک)پاکستان تحریکِ انصاف کے رہنما و سینیٹر فیصل جاوید نے کہاہے کہ نواز شریف دوبارہ اپنی پرانی روش پر چل نکلے ہیں، ’خرید لو‘ یا ’دھمکائو‘ نیا نہیں ان کا پرانا وتیرہ ہے۔ایک بیان میں پاکستان تحریکِ انصاف کے رہنما و سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ ریاستی و قومی اداروں کے سربراہان و افسران کی

طویل فہرست ہے جنہیں شریف خاندان نے شر کا نشانہ بنایا۔انہوں نے کہا کہ رفیق تارڑ کا بریف کیس بھر کر کوئٹہ میں ججوں کی خریداری کے لیے جانا بھی ذہن میں تازہ ہے، جسٹس ملک قیوم کو شہباز اور ان کے درباری سیف الرحمن کی فون کالز میڈیا پر گونج رہی ہیں۔فیصل جاوید خان نے کہا کہ چھانگا مانگا میں اراکین اسمبلی کا سجایا گیا جمعہ بازار بھی قوم کے سامنے ہے، جسٹس سجاد علی شاہ کی عدالت پر مسلح یلغار کے شرم ناک مناظر قوم کے سامنے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عدالتوں سے سزا یافتہ خاتون کی قیادت میں نیب کے دفتر پر پتھرائو تو کل کی بات ہے، اداروں پر حملہ ان کا پرانا وتیرہ ہے، قوم نے ہمیشہ اسے نفرت کی نگاہ سے دیکھا ہے۔پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ ہر آرمی چیف کے خلاف محاذ کھولنا اور اس پر حملے کرنا ان کی روایت رہی ہے، ہمارے ادارے خصوصاً فوج ہمارے دفاع کی ضامن اور ہمارا فخر ہے۔انہوں نے کہا کہ پہلی بار ان کا واسطہ اس مردِ قلندر سے پڑا ہے جسے خریدنے کا تصور بھی ناممکن ہے، خرید نہ سکے تو وزیرِ اعظم عمران خان سے این آر او کی بھیک مانگنے آ پہنچے۔پاکستان تحریکِ انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ این آر او نہ ملا تو یہ لوگ ریاست کے خلاف ہندوستان کے ہم آواز بن گئے۔انہوں نے کہا کہ قوم نے عمران خان کو چوروں کے کڑے احتساب کا مینڈیٹ دیا ہے، عمران خان قوم سے کیا گیا ایک ایک وعدہ نبھائیں گے اور ان سے پورا حساب لیں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *