ایک اور پرندہ (ن)لیگ کی چھتری سے اُڑان بھرنے کو تیار، پارٹی رہنماؤں میں تشویش کی لہر

کوئٹہ (نیوز ڈیسک) مسلم لیگ ن بلوچستان کے صدر عبدالقادربلوچ پارٹی قیادت سے ناراض ہوگئے، پی ڈی ایم کے جلسے میں ثناء اللہ زہری کوکیوں نہیں بلایا گیا؟ عبدالقادر بلوچ نے مستعفی ہونے کا فیصلہ کرلیا ہے۔تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن بلوچستان کے صدر لیفٹیننٹ جنرل ر عبدالقادر بلوچ نے کچھ تحفظات کی بناء پرصدارت

سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کرلیا ہے۔عبدالقادر بلوچ پی ڈی ایم کے جلسے میں سابق وزیر اعلیٰ ثناء اللہ زہری کو نہ بلانے پر ناراض ہیں۔ ن لیگ کی جانب سے ثناء اللہ زہری کو جلسے میں اس لیے شرکت کی دعوت نہیں دی گئی کہ ثناء اللہ زہری اور اخترمینگل کے درمیان اختلافات چل رہے ہیں، جس کے باعث ن لیگی قیادت نے پی ڈی ایم کے پلیٹ پر کسی ناخوشگوار صورتحال سے بچنے کیلئے ثناء اللہ زہری کو دعوت نہیں دی۔ذرائع کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ن لیگ کو اس سے پہلے بھی ثناء اللہ زہری سے اختلاف ہیں۔ نوازشریف کے منع کرنے کے باوجود ثناء اللہ زہری نے بلوچستان کی وزارت اعلیٰ سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ثناء اللہ زہری کے خلاف تحریک عدم اعتماد آئی تو انہوں نے پہلے ہی استعفیٰ دے دیا تھا۔ اسی طرح مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال کا کہنا ہے کہ اختر مینگل اور ثنا اللہ زہری کے درمیان ایک تنازعہ ہے۔ہم نہیں چاہتے تھے کہ ثنا اللہ زہری جلسے میں شریک ہوں۔ اگر عبدالقادر بلوچ کو استعفیٰ دینا ہے تو ان کی مرضی ہے۔ اسی طرح عبدالقادر بلوچ کے استعفے کے ساتھ ہی ن لیگ نے سینئر رہنماء یعقوب خان ناصر کو بلوچستان کا صدر بنائے کا عندیہ دے دیا ہے۔ یعقوب ناصر کو پارٹی صدر بنانے کا مقصد ن لیگ کو بلوچستان میں متحرک اور فعال جماعت بنانا ہے، کوئٹہ جلسے میں کم لوگ لانے پردیگر پارٹی عہدیداروں کو بھی تبدیل کیا جاسکتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.